سندھ ہائیکورٹ ،نیب قانون کی منسوخی پر اٹارنی جنرل ،ایڈووکیٹ جنرل اور پراسیکیوٹرجنرل نیب کو نوٹس جاری

سندھ ہائیکورٹ ،نیب قانون کی منسوخی پر اٹارنی جنرل ،ایڈووکیٹ جنرل اور ...

کراچی(این این آئی)نیب قانون ختم کرنے کے خلاف سندھ ہائی کورٹ نے اٹارنی جنرل، ایڈووکیٹ جنرل اور پراسکیوٹر جنرل نیب کو نوٹس جاری کردئیے ہیں۔درخواست مشترکہ طورپرمتحدہ قومی موومنٹ پاکستان اور مسلم لیگ فنکشنل نے دائر کی تھی۔تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں اپوزیشن کی دو جماعتوں ایم کیو ایم پاکستان کے صوبائی رکن رؤف صدیقی اور فنکشنل لیگ کی نصرت سحر عباسی نے سندھ میں نیب کے قانوں کو ختم کرنے کے خلاف درخواست دائر کی۔درخواست گزاروں نے موقف اختیار کیا کہ ایک وفاقی قانون کو ختم کرکے صوبائی قانون لانا آئین کی بنیادی سکیم کے خلاف ہے۔ایم کیو ایم پاکستان اور فنکشنل کی جانب سے دائر مشترکہ پٹیشن پر چیف جسٹس احمد علی شیخ نے سماعت کرتے ہوئے اٹارنی جنرل، ایڈووکیٹ جنرل اور پراسکیوٹر جنرل نیب کو نوٹس جاری کردیئے ہیں۔سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹرفاروق ستارنے کہاکہ سندھ حکومت کو یہ اختیار نہیں تھا کہ نیب کے قانون کو ختم کرے یا ایسی قرارداد پیش کرے۔ انہوں نے کہا کہ نیب کے پاس موجود 179کیسز میں پیپلز پارٹی کے رہنما اور سرکاری ملازم شامل ہیں درحقیقت سندھ حکومت نیب کے قانون کو ختم کرکے کرپٹ لوگوں کو بچانا چاہتی ہے۔اس موقع پر فنکشنل لیگ کی نصرت سحر عباسی نے کہا کہ سندھ کے عوام صوبے کے حکمرانوں کی اصلیت پہچان چکے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ نیب کے خلاف قرارداد پیش کرنے والے پر خود نیب میں ریفرنس چل رہا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...