ضلع ناظم چارسدہ اور نائب ناظم کیخلاف عدم اعتماد کی تحریک جمع

ضلع ناظم چارسدہ اور نائب ناظم کیخلاف عدم اعتماد کی تحریک جمع

چارسدہ (بیورو رپورٹ) ضلعی ناظم فہد ریاض اور نائب ناظم حاجی مصور شاہ کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک جمع کر دی گئی ۔اے این پی ، جے یوآئی اور قومی وطن پارٹی کا اتحاد ۔ قومی وطن پارٹی نے ا ے ڈی لوکل گورنمنٹ کے پاس تحریک عدم اعتماد جمع کر کے 15اگست کو ضلع کونسل کا اجلاس طلب کر نے کی درخواست دے دی ۔ تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخوا حکومت سے قومی وطن پارٹی کے اخراج کے بعد قومی وطن پارٹی اور عوامی نیشنل پارٹی کے مابین فاصلے کم ہونا شروع ہو گئے ۔پہلے مرحلے میں قومی وطن پارٹی ،جے یوآئی اور اے این پی تحریک انصاف سے وابستہ ضلع ناظم فہد ریاض اور جماعت اسلامی کے ضلعی نائب ناظم اعلی حاجی مصور شاہ کو ہٹانے پر متفق ہو گئے اور اس حوالے سے قومی وطن پارٹی کے ضلعی ممبران عارف پراچہ ، امیر رحمان اور ہدایت اللہ خان نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ کو تحریری طور پر آگاہ کرکے 15اگست کو ضلع کونسل کا اجلاس طلب کرنے کی درخواست جمع کر دی ہے ۔ عدم اعتماد کی تحریک میں ضلعی ناظم اعلی اور نائب ناظم اعلی پر کرپشن اور اختیارات کے ناجائز استعمال کے ساتھ ساتھ لوکل گورنمنٹ رولز کے برعکس ضلعی حکومت اور ایوان چلانے کے الزامات لگائے گئے ہیں۔ یاد رہے کہ قومی وطن پارٹی ، جماعت اسلامی اور تحریک انصاف پر مشتمل سہ فریقی اتحاد نے چارسدہ میں ضلعی حکومت قائم کی تھی جبکہ جے یوآئی اور اے این پی اپو زیشن میں رہی ۔ دلچسپ امر یہ ہے کہ چارسدہ کے علاوہ خیبر پختونخوا کے تمام اضلاع میں ضلعی حکومتوں نے بجٹ اجلاس منعقد کر کے نئے مالی سال کا بجٹ منظور کر چکی ہے مگر صوبائی حکومت سے قومی وطن پارٹی کے اخراج کے بعد چارسدہ میں سہ فریقی اتحادپر بھی اثرات پڑ ے جس کی وجہ سے تحریک انصاف اور جماعت اسلامی بجٹ اجلاس کیلئے کورم پورا کرنے میں ناکام رہی جس کی وجہ سے ابھی تک نئے مالی سال کا بجٹ اجلاس التواء کا شکار ہے ۔ 75ممبران پر مشتمل ضلع کونسل میں اس وقت اے این پی کے 25، قومی وطن پارٹی کے 16،جمعیت علمائے اسلام کے 9، تحریک انصاف کے 21جبکہ جماعت اسلامی کے 4ممبران ہیں۔ تحریک عدم اعتماد کے حوالے سے موقف جاننے کیلئے ضلع ناظم فہد ریاض اور نائب ناظم حاجی مصور شاہ سے رابطہ کیا گیا مگر ان کے موبائل مسلسل بند آرہے تھے ۔ دوسری طرف ذرائع سے معلوم ہو اہے کہ اے این پی ، قومی وطن پارٹی اور جمعیت علمائے اسلام کے اکابرین عام انتخابات کے حوالے سے بھی مشترکہ لائحہ عمل طے کرنے پر سنجیدگی سے غور کر رہی ہے اور اس حوالے سے خفیہ ملاقاتوں اور اجلاسوں کا سلسلہ جاری ہے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...