چارسدہ ،پڑانگ پولیس اہلکار کا شہری کی رہائی کیلئے والدہ سے رشوت کا مطالبہ

چارسدہ ،پڑانگ پولیس اہلکار کا شہری کی رہائی کیلئے والدہ سے رشوت کا مطالبہ

چارسدہ (بیورو رپورٹ) پڑانگ پولیس نے ناکردہ گناہ کی پاداش میں گرفتار شہری کی رہائی کے عوض والدہ سے 30ہزار رشوت کا مطالبہ کر دیا ۔ ناکر دہ گناہ کی پاداش میں ان کے بیٹے کو پہلے بھی گرفتار کیا گیا تھا جسے 60ہزار روپے رشوت لینے کے بعد پولیس نے رہا کیا ۔ بیٹے کو فوری طور پر رہا نہ کیا گیا تو خود پر تیل چھڑک کر آگ لگا دونگی ۔ خاتون کی پریس کانفرنس ۔ایس ایچ او پڑانگ نے الزامات مسترد کر دئیے۔ تفصیلات کے مطابق مرزا گان چارسدہ کی رہائشی خاتون زوجہ باور خان ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ چھ روز پہلے پڑانگ پولیس نے ان کے بیٹے اسفندیار کو ناکردہ گناہ کے پاداش میں گرفتار کر کے غائب کیا ہے اور اب ان پر ناجائز مقدمات درج کرنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں ۔ پڑانگ پولیس کے ایس ایچ او ایوب خان بیٹے کے رہائی کے عوض 30ہزار روپے مانگ رہے ہیں مگر ان کے پاس کچھ بھی نہیں۔ انہوں نے کہاکہ پیر کے روز ان کے بیٹے اسفندیار کو پڑانگ پولیس نے گرفتار کیا ہے مگر پولیس آئے روز چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرکے لیڈیز پولیس کے بغیر گھر پر چھاپے لگا رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پہلے بھی ان کے بیٹے کو گرفتار کیا گیا تھا اور اس وقت بھی پڑانگ پولیس نے رہائی کے عوض 60ہزار روپے رشوت لیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کا بیٹا محنت مزدوری کر کے گھر کا چولہا جلاتے ہیں ۔ آج تک ان کے بیٹے نے کوئی جرم نہیں کیا مگر پولیس اہلکار وصال کی ایماء پر چارسدہ پولیس آئے روز ہمیں بے جا تنگ کر رہی ہیں جس کی وجہ سے معاشرے میں ان کی عزت پامال ہو رہی ہے ۔ خاتون نے وزیر اعلی اور آئی جی خیبر پختونخوا سے اپیل کی کہ ان کے بیٹے کو باعزت طور پر رہا کرکے پڑانگ پولیس سے ان کو نجات دلائی جائے بصور ت دیگر وہ فاروق اعظم چوک میں خود پر تیل چھڑک کر خود کشی کریگی ۔ دوسری طرف اس حوالے سے تھانہ پڑانگ کے ایس ایچ او ایوب خان نے بتایا کہ گرفتار ملزم اسفندیار عادی چور اور رہزن ہے ملزم کو مدعیان نے باقاعدہ ایف آئی آر میں چارج کیا ہے جس کے بعد ان کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ۔ رشوت طلب کرنے کے حوالے سے ایس ایچ او ایوب خان نے کہاکہ واردات میں چھینی گئی رقم کی ریکوری پولیس کی ذمہ دار ی ہے جس کو خاتون رشوت سمجھ رہی ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...