’ہم دونوں ایک دوسرے کے جسم سے یہ چیز نکال کر استعمال کرتے ہیں‘ نوجوان لڑکا لڑکی نے ایسا اعلان کردیا کہ جان کر آپ بھی کانپ اٹھیں گے

’ہم دونوں ایک دوسرے کے جسم سے یہ چیز نکال کر استعمال کرتے ہیں‘ نوجوان لڑکا ...
’ہم دونوں ایک دوسرے کے جسم سے یہ چیز نکال کر استعمال کرتے ہیں‘ نوجوان لڑکا لڑکی نے ایسا اعلان کردیا کہ جان کر آپ بھی کانپ اٹھیں گے

  


روم (نیوز ڈیسک) یوں تو دنیا میں اظہار محبت کے ہزار طریقے ہیں لیکن ایک اطالوی جوڑے نے ایک دوسرے سے محبت کے اظہار کیلئے ایسا وحشیانہ طریقہ اپنارکھا ہے کہ تصور کرکے ہی انسان کے رونگٹے کھڑے ہوجائیں۔

دی مرر کی رپورٹ کے مطابق 30سالہ ڈینس البرٹو اور اس کی 20 سالہ گرل فرینڈ ایلاریا محبت کے اظہار کیلئے ایک دوسرے کا خون پیتے ہیں۔ ڈینس اور ایلاریا کی ملاقات فیس بک کے ذریعے اس وقت ہوئی جب ڈینس نے اپنے سرکس کے کرتب کیلئے ایک معاون کی بھرتی کیلئے اشتہار دیا تھا۔

یہ جوڑا ایک دوسرے کا خون ضرور پیتا ہے لیکن ان کا طریقہ فلموں اور کہانیوں میں پائے جانے والے ڈریکولا سے خاصا مختلف ہے۔ وہ ایک دوسرے کے جسم میں دانت گاڑ کر خون پینے کی بجائے سرنج کے ذریعے خون نکالتے ہیں اور پھر اسے شیشے کے برتنوں میں ڈال کر پیتے ہیں۔

وہ کام جسے کرنے کے بعد میاں بیوی روتے رہتے ہیں، اس کے فوراً بعد اس جوڑے سے اپنی خوشی نہیں چھپائی جارہی، اس تصویر میں کس بات پر بے حد خوش ہیں؟ جان کر آپ کو اپنی آنکھوں پر یقین نہ آئے گا

ڈینس نے خون پینے کی اپنی عادت کے متعلق بات کرتے ہوئے بتایا” خون افسانوی شہرت رکھنے والا ایک مشروب ہے، لیکن ہمارے لئے یہ زندگی کی حیثیت رکھتا ہے۔ ہم ایک دوسرے کا خون اپنی باہمی محبت کی تجدید کیلئے پیتے ہیں۔ جس طرح شادی شدہ جوڑے ایک دوسرے کو انگوٹھی پہناتے ہیں اور دیگر تحائف دیتے ہیں اسی طرح ہم ایک دوسرے کا خون پی کر اپنی محبت کو مضبوط کرتے ہیں۔ ہماری ملاقات تین سال قبل ہوئی اور جب سے ہم دوست بنے ہیں ایک دوسرے کا خون پینے کا سلسلہ جاری ہے۔“

دونوں نے اپنے ایک ماہر ڈینٹسٹ کی مدد سے اپنے دانتوں کو بھی ڈریکولا کے نوک دار دانتوں جیسا بنوارکھا ہے، اگرچہ وہ اسے ایک دوسرے کو زخم لگانے کیلئے استعمال نہیں کرتے۔ یوں تو دونوں ہی ایک دوسرے کے خون کے شوقین ہیں لیکن ایلاریا اسے زیادہ پسند کرتی ہے اور وہ روزانہ ڈینس کا کافی زیادہ خون پی جاتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس