تمام تعلیمی ادارے ایس او پیز کے ساتھ فوری کھول دئیے جائیں، ایمل ولی 

تمام تعلیمی ادارے ایس او پیز کے ساتھ فوری کھول دئیے جائیں، ایمل ولی 

  

پشاور(سٹی رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ تمام تعلیمی ادارے فوری طور پر احتیاطی تدابیر کے ساتھ کھول دیے جائیں اور حکومت تعلیمی اداروں بارے کسی بھی فیصلے سے قبل ایجوکیشن سیکٹر سے وابسطہ تمام افراد کو اعتماد میں لیں۔ باچاخان مرکز پشاور میں پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کی مذاکراتی کمیٹی سے ملاقات کے دوران اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا کہ کہ کورونا وبا کی وجہ سے سب سے زیادہ تعلیمی ادارو پر اثر پڑا ہے اور حکومت اگر سولو فلائیٹ کے ساتھ فیصلے کرے گی تو اس کا خمیازہ عوام، طلبہ و طالبات اور ایجوکیشن سیکٹر پر پڑے گا۔حکومت پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک (پین) کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے کریں۔ ایمل ولی خان نے مزید کہا کہ ناقص پالیسیوں کی وجہ سے طلبہ وطالبات کا قیمتی وقت پہلے سے ضائع کردیا گیا ہے۔حکومت ریسٹورنٹس، ہوٹل، بازار، مارکیٹس اور سیاحتی مقامات کھول سکتی ہے تو تعلیمی ادارے کیوں نہیں؟ تعلیمی ادارے کھلے ہو تو جیل کے دروزاے بند ہوتے ہیں اب تعلیمی ادارے بند ہیں تو ہمارے بچوں اور نوجوانوں کو کس طرف لے جانے کی سازش کی جارہی ہے۔ ایمل ولی خان نے مذاکراتی کمیٹی کو یقین دلایا کہ اے این پی پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کے تمام مطالبات کے ساتھ کھڑی ہے، تعلیمی ادارے بند ہونے سے مڈل کلاس خاندانوں کے بچوں کو غیرتعلیم یافتہ کیا جارہا ہے جس کے اے این پی کبھی بھی اجازت نہیں دے گی اور ہر فورم پر اپنے عوام کے حقوق کیلئے آواز اٹھاتی رہے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -