ادارہ، شہری دفاع خیبر پختونخوا رضاکاروں کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کا آغاز 

ادارہ، شہری دفاع خیبر پختونخوا رضاکاروں کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کا آغاز 

  

پشاور(سٹی رپورٹر)محکمہ ریلیف بحالی و آبادکاری،خیبر پختونخوا کے زیر انتظام ادارہ، شہری دفاع خیبر پختونخوا رضاکاروں کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کا آغاز کر رہی ہے جس کے تحت صوبے کے تمام 35اضلاع میں ایک لاکھ سے زائد پودے لگائے جائینگے۔ سول ڈیفنس، خیبر پختونخوا شجرکاری مہم ''ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات سے خطے کو شہری دفاع، خیبر پختونخوا  کے ساتھ ملکر بچائیں ''کے سلوگن کے تحت 14اگست یوم آزادی پاکستان سے شروع کر رہی ہے۔مون سون شجرکاری مہم کے حوالے سے فہد اکرام قاضی، ڈائریکٹر سول ڈیفنس  نے اپنے خصوصی بیان میں کہا ہے کہ ماحولیاتی تبدیلی سے ترقی پذیر ممالک بری طرح متاثر ہو رہے ہیں اور جنگلات کی بے دریغ کٹائی سے موسمیاتی تبدیلیاں آرہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کو سر سبز و شاداب بنانے کے لئے شہری دفاع کے رضاکار میدان میں کود پڑے  ہیں اور ملاکنڈ اور ہزارہ ڈویژن کے  گلیشیائی خطرات سے دوچار اضلاع میں کثیر تعداد میں پودے لگائے کے مہم کا آغاز  کر دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ یو این ڈی پی گلاف II- پراجیکٹ کے تعاون سے 5 ہزار سے زائد رضاکار مون سون شجرکاری مہم میں حصہ لیں رہے ہیں اور  14اگست کو پچاس ہزار شہری دفاع رضاکار35اضلاع میں شجرکاری مہم میں حصہ لینگے۔انہوں نے کہا صوبہ بھر میں شجرکاری مہم کے تحت ایک لاکھ سے زائد پودے لگائے جائینگے جبکہ کثیر تعداد میں شجر کاری سے قدرتی آفات سے دوچار اضلاع میں ممکنہ نقصانات میں کمی لائی جا سکے گی۔انہوں نے مزید بتایا کہ شجرکاری مہم کا  بنیادی مقصد آئندہ اپنی نسلوں کیلئے سرسبز و شاداب اور ماحول دوست پاکستان ورثہ میں چھوڑنا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -