ای سی سی کے فیصلوں کی توثیق، جشن آزادی شایان شان طریقے سے منانیکا فیصلہ

      ای سی سی کے فیصلوں کی توثیق، جشن آزادی شایان شان طریقے سے منانیکا فیصلہ

  

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)  وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت گزشتہ روز وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں جشن آزادی کو شایان شان طر یقے سے منا نے کا فیصلہ کیا گیا ہے جبکہ کابینہ کے اراکین نے نیب کے آفس کے باہر لیگی کارکنوں کی ہنگامہ آرائی کی مذمت کی اور کہا کہ ہنگامہ آرائی کرنے اور پتھر لانے والوں کے خلاف قانون کار وائی ہونی چاہئے۔ کابینہ اراکین نے کہا کہ نیب کو ہراساں کرنے کی کوشش کی گئی۔ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں ملکی سیاسی، معاشی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں کی توثیق کردی۔ اجلاس میں مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے  بتایا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ تین بلین ڈالر پر آگیا۔سٹیٹ بینک کے ذخائر 12اعشاریہ پانچ ارب ڈالر ہو گئے ہیں۔ زرمبادلہ ذخائر 8ارب ڈالر سے بڑھ کر 12.5ارب ڈالر تک پہنچ چکے ہیں۔معیشت میں بہتری سے سٹاک ایکس چینج میں مسلسل استحکام آ رہا ہے۔ وزیر اعظم نے کابینہ کوہدایت کی کہ جشن آزادی کو شایان شان طریقے سے منایا جائے،احتیاطی تدابیر مدنظر رکھی جائیں۔ اجلاس میں چیئرمین سی ڈی اے نے مارگلہ روڈ پر تجاوزات کیخلاف آپریشن سے متعلق بریفنگ دی۔اسلام آباد کے مضافات میں قبضہ مافیا کے خلاف اقدامات پر آئی جی اسلام آباد نے کابینہ کو بریفنگ دی۔اجلاس میں  پائلٹس کے مشکوک لائسنس کے حوالے سے بھی کابینہ کو بریف کیا گیا،پائلٹس کے لائسنس کا معاملہ ستمبر 30 تک نمٹانے کی ہدایت کی،شاہد محمود خان کو ایم ڈی پارکو تعینات کرنے کی منظوری دی گئی۔ اجلاس میں وزیراعظم کو میڈیا کے واجبات کے ادائیگی کے حوالے سے آگاہ کیا گیاکہ میڈیا کو 891ملین روپے کی ادائیگیاں کی جا چکی ہیں۔چیئرمین سی ڈی اے نے بتایا کہ 450ارب روپے مالیت کی اراضی وا گزار کرائی گئی ہے۔کابینہ اجلاس کے بعد وفاقی وزیر سینیٹر شبلی فراز نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ کہ وزیراعظم کی اخراجات میں کمی کی پالیسی اور حکومتی خرچے کم ہونے سے مالی خسارہ ایک فیصد کم ہوا ہے،کورونا وائرس سے قبل مالی خسارہ9.1تھا متوقع تھاجو کہ8.1ہے۔ وزیراطلاعات شبلی فراز نے کہا کہ احساس پروگرام کے زریعے ڈیڑھ کروڑ لوگوں کو پیسے شفاف طریقے سے دیئے گئے۔سخت لاک ڈاؤن کا مطالبہ اشرافیہ کا تھا۔سینیٹر شبلی فراز نے کہا کہ سخت وقت گزر گیا بہتر وقت پاکستان کا منتظر ہے۔  انہوں نے کہا کہ میڈیا ہاؤسز کو 80 فیصد ادائیگی کرچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ،قرضوں سے بیرون ملک عزت نہیں ہوسکتی اور نہ ہی آزادانہ فیصلے ہو سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سعودی عرب دوست ملک ہے۔ پیسوں کی واپسی کو شکوک و شبہات کی نظر سے نہ دیکھا جائے۔مریم نواز کو گیارہ سو کنال زمین کا جواب دینے کے لیے بلایا گیا تھا،سوالوں کے جواب دینے کی بجائے برات لے کر پہنچ گئیں۔نیب میں پیشی کو سیاسی رنگ دیا گیا۔آج مریم نواز گروپ پریس کانفرنس کر رہا تھا کل شہباز شریف گروپ پریس کانفرنس کرے گا۔مریم نواز کی پیشی کے موقع پر ڈرامہ اسٹیج کیا گیا،لوٹ مار کا جواب دینا ہوگا۔ 

کابینہ اجلاس

مزید :

صفحہ اول -