چولستان،کروڑوں روپے کی سرکاری اراضی پر مافیا کا قبضہ 

چولستان،کروڑوں روپے کی سرکاری اراضی پر مافیا کا قبضہ 

  

لیاقت پور(نامہ نگار) چولستان کی 25 کروڑ روپے مالیت کی سرکاری اراضی پر بااثر مافیا نے قبضہ کرلیا چولستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی قبضہ واگزار کرانے میں ناکام ہوگئی چک نمبر 317 سکس آر کے کاشتکار امیربخش شیخ اور شبیر احمد شیخ نے پریس کلب لیاقت پور میں صحافیوں کو بتایا کہ چولستان کے چک نمبر 317 الف سکس آر میں چار بھائیوں بشیراحمدمہر، جمال مہر، نزیر احمد مہر اور عبدالحمید(بقیہ نمبر36صفحہ10پر)

 مہر نے مجموعی طور پر ایک سو پچیس ایکڑ اراضی جس کی مالیت تقریبا پچیس کروڑ روپے بنتی ہے پر گزشتہ 14 سال سے قبضہ کر کے کاشت کاری شروع کر رکھی ہے مافیا نے مذکورہ غیر قانونی اراضی کا پانی منظور نہ ہونے کی وجہ سے مافیا ہو وہاں کے غریب کاشتکار اور چھوٹے زمینداروں کا منظور شدہ پانی اسلحہ کے زور پر چوری کر رہا ہے انہوں نے بتایا کہ دو ماہ قبل انہوں نے چولستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے چیئرمین اور ایم ڈی کو اس غیر قانونی قبضہ کی بابت تحریری طور پر آگاہ کیا جس پر محکمہ نے ایک سو پچیس کی بجائے صرف 38 ایکڑ اراضی پر مافیا کا قبضہ تسلیم کرکے اپنی رپورٹ تیار کی مگر یہ اراضی بھی واگزار نہیں کرائی جا سکی کیونکہ مذکورہ عملہ اور چولستان کی بااثر شخصیات اس مافیا کی سرپرستی اور پشت پناہی کر رہی ہیں، انہوں نے وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار،چیف سیکرٹری پنجاب اور کمشنر بہاولپور سے مذکورہ اراضی فوری طور پر واپس لینے اور گزشتہ 14 سال کا تاوان وصول کرکے قومی خزانے میں جمع کرانے کا حکم دینے کا مطالبہ کیا انہوں نے بتایا کہ مذکورہ اراضی چالیس ہزار روپے فی ایکڑ سالانہ ٹھیکہ پر دی جا سکتی ہے۔

مافیا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -