کورونا وائرس سے نجات کا اعلان کرنے کے بعد نیوزی لینڈ میں لاک ڈاﺅن، افراتفری پھیل گئی

کورونا وائرس سے نجات کا اعلان کرنے کے بعد نیوزی لینڈ میں لاک ڈاﺅن، افراتفری ...
کورونا وائرس سے نجات کا اعلان کرنے کے بعد نیوزی لینڈ میں لاک ڈاﺅن، افراتفری پھیل گئی

  

ولنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) نیوزی لینڈ میں کورونا وائرس کے 4نئے کیس سامنے آنے پر وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کی طرف سے سخت لاک ڈاﺅن کا اعلان کر دیا گیا ہے جس سے ملک میں ایک افراتفری پھیل گئی اور لوگ لاک ڈاﺅن کے پیش نظر خریداری کے لیے سڑکوں پر نکل آئے۔ میل آن لائن کے مطابق نیوزی لینڈ میں کئی ہفتوں کے بعد کوروناوائرس کے صرف چار کیس سامنے آئے جس پر وزیراعظم کی طرف سے انتہائی سخت لاک ڈاﺅن کا اعلان کر دیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق لاک ڈاﺅن کا اعلان ہوتے ہی شہروں اور قصبات میں لوگ اشیائے ضروریہ کی خریداری کے لیے سڑکوں پر نکل آئے جس سے اکثر جگہوں پر بدترین ٹریفک جام دیکھنے کو ملا اورسٹورز پر اشیاءکی قلت پیدا ہو گئی۔ یہ صورتحال دیکھتے ہوئے وزیراعظم جسنڈا آرڈرن اور مختلف شہروں کے میئرز کی طرف سے شہریوں کو پرسکون رہنے کی تلقین کی گئی ہے اور اعلان کیا گیا ہے کہ لاک ڈاﺅن کے باوجود سپرمارکیٹس کھلی رہیں گی اور لوگوں کو اشیائے ضروریہ خریدنے کے لیے گھروں سے نکلنے کی اجازت ہو گی چنانچہ لوگوں کو اشیاءگھروں میں سٹاک کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔واضح رہے کہ چاروں نئے کیس آکلینڈ کی رہائشی ایک ہی فیملی سے تعلق رکھتے ہیں جن میں ایک 50سالہ آدمی اور ایک کم عمر بچہ شامل ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -