نیشنل گرڈ میں خرابی کے بعد مختلف شہروں میں بجلی کی فراہمی بحال کرنے کا سلسلہ جاری

نیشنل گرڈ میں خرابی کے بعد مختلف شہروں میں بجلی کی فراہمی بحال کرنے کا سلسلہ ...
Loadshedding

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) نیشنل پاور کنٹرول سسٹم میں فنی خرابی کو کئی  گھنٹوں سے زائد وقت گزرنے کے بعد ٹھیک کر لیا گیا ہے  اور متعدد شہروں میں بجلی کی فراہمی کی بحالی کا سلسلہ جاری ہے،  لاہور شہر کے کچھ علاقوں میں جزوی طور پر بجلی بحال کر دی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق نیشنل پاورکنٹرول سسٹم میں فنی خرابی کی وجہ سے تربیلاسے لاہور تک بجلی کی فراہمی بند ہوگئی تھی جس کی بحالی کیلئے 5 سے 6 گھنٹوں کا وقت دیا گیا تھا تاہم ابھی تک بجلی کی فراہمی مکمل طور پر بحال نہیں کی جا سکی ۔ بجلی معطل ہونے کی وجہ سے اسلام آباد سمیت پنجاب اورخیبرپختونخواہ کے کئی علاقوں میں بجلی بند ہوگئی تھی،پارلیمنٹ ہاﺅس کی بجلی بھی بند ہوگئی تھی جس پر بیک اپ جنریٹربھی لوڈ نہ اٹھاسکااورپارلیمنٹ کے باہر لگے سکینرزبھی بند ہو گئے۔کئی گھنٹوں کی مسلسل بندش کے بعد لاہور میں گلشن راوی، دھرم پورہ، ساندہ، رستم پارک سمیت کئی علاقوں میں بجلی کی فراہمی بحال ہو گئی ہے تاہم شہر کا کچھ حصہ اب بھی تاریکی میں ڈوبا ہوا ہے ۔ ذرائع کے مطابق فیصل آباد، ملتان، گجرات، ڈی آئی خان، سیالکوٹ، راولپنڈی ، قصور، شجاع آباد، پتوکی، چنیوٹ، ملتان اور گردونواح کےاکثر علاقوں میں بجلی بحال ہو گئی ہے تاہم بعض علاقے  مکمل تاریکی میں ڈوبے ہیں۔ بجلی کی طویل بندش کے باعث پانی کی فراہمی بھی بند ہو گئی ہے جس کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

وزیراعظم نے ایک ساتھ دوخوشخبریاں سنادیں۔

غازی بروتھا اور تربیلا ڈیم کے بریک ڈاﺅن کی وجہ سے پنجاب کے تمام آئی پی پیز بھی بند ہو گئے تھے جبکہ وزیراعظم نواز شریف نے نوٹس لیتے ہوئے فوری رپورٹ طلب کر لی ہے۔ ذرائع کے مطابق علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر بجلی کے متبادل نظام کی ناکارہ ہو گئے ہو جانے کے باعث فلائٹ آپریشن مکمل طور پر رک گیا تھا اور جبکہ ائیرپورٹ کا رن وے بھی اندھیرے میں ڈوب چکا ہے۔بجلی کی عدم دستیابی کے باعث  لاہور کے متعدد ہسپتالوں میں بجلی کے باعث وینٹی لیٹرز بھی بند ہو گئے ہیں جبکہ متعدد آپریشنز ملتوی کر دیئے گئے۔

میچ کے دوران ساتھ بیٹھے تماشائی کی محبوبہ کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا

واضح رہے کہ 2012میں بھی غازی بروتھا اور تربیلا ڈیم میں بریک ڈاﺅن سے پورا ملک اندھیروں میں ڈوب گیا تھا۔

مزید : بزنس /Headlines