آسان سا سوال جس کا جواب بچے تو باآسانی دے دیتے ہیں لیکن اکثر بڑے ناکام ہوجاتے ہیں، کیا آپ بتاسکتے ہیں یہ بس دائیں طرف جارہی ہے یا بائیں؟

آسان سا سوال جس کا جواب بچے تو باآسانی دے دیتے ہیں لیکن اکثر بڑے ناکام ہوجاتے ...
آسان سا سوال جس کا جواب بچے تو باآسانی دے دیتے ہیں لیکن اکثر بڑے ناکام ہوجاتے ہیں، کیا آپ بتاسکتے ہیں یہ بس دائیں طرف جارہی ہے یا بائیں؟

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دماغی صلاحیت جانچنے کے لیے بنایا گیا یہ پزل عموماً بچے فوراً حل کر لیتے ہیں لیکن بڑوں کے لیے یہ ایک معمہ بن چکا ہے اور کافی غوروخوض کے بعد بھی بڑے اکثر غلط جواب دیتے ہیں۔نیشنل جیوگرافک نے اس پزل میں ایک سکول بس بنائی ہے جس کی کھڑکیاں بالکل صاف بنائی گئی ہیں اور ان میں سے مسافر بھی نظر نہیں آتے۔ بس کا اگلا اور پچھلا حصہ بھی بالکل ایک جیسے ہیں۔ یہ بس دکھا کر نیشنل جیوگرافک نے سوال پوچھا ہے کہ یہ کس طرف جا رہی ہے؟

مزید پڑھیں: آدمی کے گلے میں کتے کا پٹہ ڈال کر سڑک پر پھرانے والی ویڈیو کی اصل کہانی سامنے آگئی، حقیقت اتنی شرمناک کہ یقین کرنا مشکل

اس سوال کا جواب یہ ہے کہ چونکہ بس کی نظر آنے والی سائیڈ پر اس کا گیٹ نہیں ہے۔ اس سے آپ بس کی ڈرائیونگ سیٹ کا اندازہ لگا سکتے ہیں۔ بسوں کی ڈرائیونگ سیٹ ہمیشہ گیٹ کی مخالف سمت میں ہوتی ہے۔ اب اگر آپ پاکستان یا کسی بھی اور ایسے ملک میں ہیں جہاں گاڑیاں الٹے ہاتھ چلائی جاتی ہیں اور ان کی ڈرائیونگ سیٹ سیدھے ہاتھ ہوتی ہے تو یہ بس آپ کے دائیں جانب جا رہی ہے۔ اور اگرآپ امریکہ جیسے کسی ملک میں ہیں جہاں ٹریفک سیدھے ہاتھ چلتی ہے اور گاڑیوں کی ڈرائیونگ سیٹ الٹے ہاتھ ہوتی ہے تو یہ بس بائیں طرف جا رہی ہے۔برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق نیشنل جیوگرافک کا کہنا ہے کہ انہوں نے جتنے بچوں سے یہ پزل حل کرنے کو کہا ان میں سے 80فیصد نے فوری طور پر اس کا درست جواب دیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس