ایران نے درجنوں طیارے خریدنے کے لئے اتنی بڑی ڈیل پر دستخط کردئیے کہ یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

ایران نے درجنوں طیارے خریدنے کے لئے اتنی بڑی ڈیل پر دستخط کردئیے کہ یقین کرنا ...
ایران نے درجنوں طیارے خریدنے کے لئے اتنی بڑی ڈیل پر دستخط کردئیے کہ یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

  


تہران (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ سے ایران کی لاکھ دشمنی سہی لیکن نیوکلیئر معاہدہ طے پا جانے کے بعد ایران نے اس سے اتنی بڑی خریداری کا سودا طے کر لیاہے کہ دنیا حیران رہ گئی ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق ایران ایئر کا کہنا ہے کہ اس نے امریکی کمپنی بوئنگ سے 80 ہوائی جہاز خریدنے کے معاہدے پر دستخط کردئیے ہیں۔ اس معاہدے کے تحت ایران امریکی کمپنی سے اگلے 10 سال کے دوران 16 ارب ڈالر (تقریباً 1600 ارب پاکستانی روپے) مالیت کے جہاز خریدے گا۔ ان میں 50 عدد 737 MAX آٹھ طیارے جبکہ 15 عدد 777-300 ER اور 15 عدد 777-9S طیارے بھی شامل ہیں۔ ایران اور امریکہ کے درمیان 1979ءکے انقلاب ایران کے بعد یہ سب سے بڑا معاہدہ ہے۔

پاک فوج حکومت سے مل کر فاٹا کے عوام کے استحکام اور بحالی کیلئے کام کرے گی، دہشتگردوں اور ان کے سہولت کاروں کا خاتمہ کیا جائے گا:آرمی چیف

بوئنگ کمپنی کا کہنا ہے کہ امریکی حکومت نے بھی معاہدے کی منظوری دے دی ہے اور ایران کو پہلا طیارہ 2018ءمیں ڈلیور کیا جائے گا۔ کمپنی کا یہ بھی کہنا ہے کہ معاہدے کے نتیجے میں امریکی ایرو سپیس انڈسٹری سے متعلقہ 1لاکھ ملازمین کو براہ راست فائدہ پہنچے گا۔

واضح رہے کہ ایران پر عائد عالمی پابندیاں کے باعث اس سے پہلے اس طرح کا معاہدہ ممکن نہیں تھا۔ عالمی طاقتوں اور ایران کے درمیان نیوکلیئر معاہدے کے بعد حال ہی میں امریکی کمپنی بوئنگ اور اس کی حریف فرانسیسی کمپنی ائیربس کو ایران کے ساتھ معاہدوں کی اجازت ملی تھی۔

مزید : بین الاقوامی