میڈیکل یونیورسٹیوں اور کالجز سے منسلک الائیڈ ہسپتالوں کی کارکردگی بہتر بنائی جائے،نجم شاہ

میڈیکل یونیورسٹیوں اور کالجز سے منسلک الائیڈ ہسپتالوں کی کارکردگی بہتر ...

لاہور (جنرل رپورٹر)سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کیئر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن نجم احمد شاہ نے متعلقہ ذمہ داران کو ہدایت کی ہے کہ وہ میڈیکل یونیورسٹیوں اور میڈیکل کالجز سے منسلک الائیڈ ہسپتالوں کی کارکردگی کو فوری طور پر بہتر بنانے کے اقدامات کریں اور اٹیچ ہسپتالوں میں موجود سہولیات اور وسائل سے عوام کو استفادہ کرنے کا موقع فراہم کریں۔نیز مذکورہ ہسپتالوں میں سپیشلسٹ ڈاکٹر زاوردیگراسٹاف کی تعیناتیوں کے لیے فوری اقداما ت کیے جائیں۔اُنہوں نے یہ بات اپنے دفتر میں گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال مزنگ اور لیڈی ولیگنڈن ہسپتال کے اپنے گذشتہ رات کے اچانک دورہ کے فالو اپ کے طور پر بلائے گئے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

اجلاس میں سپیشل سیکرٹری ہیلتھ ڈاکٹر ساجد محمود چوہان ، سپیشل سیکرٹری ڈویلپمنٹ عثمان معظم ، ایڈیشنل سیکرٹری ایڈمن راجہ منصور ، ایڈیشنل سیکرٹری ڈویلپمنٹ شاہد الرحمن، چیف پلاننگ آفیسر عبدالحق بھٹی ، وی سی کنگ ایڈورڈ میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر قاضی سعید، چیف ایگزیکٹو میؤ ہسپتال پروفیسر ڈاکٹر اسد اسلم خان ، وائس چانسلر فاطمہ جناح میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر خالد مسعود گوندل ، ایم ایس سر گنگا رام ہسپتال ڈاکٹر فیاض بٹ ، ڈی جی آئی ٹی پی ایم او فراز حیدر ، کنسلٹنٹ ڈاکٹر زاہد پرویز ، پروفیسر احسن وحید راٹھور اور گورنمنٹ نواز شریف ہسپتال یکی گیٹ، گورنمنٹ کوٹ خواجہ سعید ہسپتال، لیڈی ولینگڈن ہسپتال ، لیڈی ایچی سن ہسپتال ، گورنمنٹ شاہدرہ ٹیچنگ ہسپتال ، گورنمنٹ سید مٹھا ہسپتال اور گورنمنٹ ٹیچنگ ہسپتال مزنگ کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس نے شرکت کی۔ سیکرٹری ہیلتھ نجم احمد شاہ نے مزنگ ٹیچنگ ہسپتال کی حالت زار پر انتہائی افسوس اور برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس ہسپتال پر متعلقہ ذمہ داران کی کوئی توجہ نہیں اور اس کے وسائل سے استفادہ نہیں کیا جا رہا ۔ اُنہوں نے ہدایت کی کہ لاہور کے تمام الائیڈہسپتالوں کے معاملات ایک ہفتہ کے اندر درست کیے جائیں۔ نجم احمد شاہ کا کہنا تھا کہ گذشتہ رات اُن کے اچانک دورہ کے موقع پر گورنمنٹ مزنگ ہسپتال کے اکثر بیڈز خالی تھے جبکہ سینئر میڈیکل آفیسر بھی ڈیوٹی سے غیر حاضر تھا۔سیکرٹری ہیلتھ کا کہنا تھا کہ ایک جانب میؤ ہسپتال اور سر گنگا رام ہسپتال مریضوں سے اوور لوڈ ہیں اور خصوصاً گائنی وارڈز میں خواتین کو بیڈ نہیں ملتے جبکہ بڑے ہسپتالوں کے ساتھ منسلک چھوٹے ہسپتالوں کے وسائل کو استعمال میں نہیں لایا جا رہا۔ سیکرٹری ہیلتھ نے کہا کہ ٹیچنگ فیکلیٹی اپنے الائیڈ ہسپتالوں کو پوری کپسٹی کے مطابق چلانے کی ذمہ داری قبول کرے۔ سیکرٹری ہیلتھ نے ہدایت کی ہر میڈیکل یونیورسٹی اور کالج اپنے ساتھ منسلک چھوٹے ہسپتالوں کی کارکردگی کی پڑتال اور صورتحال سے باخبر رہنے کے لیے ہر پندرہ دن کے بعد متعلقہ ہسپتالوں کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹس کے ساتھ اجلاس منعقد کریں اور اُس کی رپورٹ سیکرٹریٹ کو بھجوائی جائے۔ نجم احمد شاہ نے کہا کہ وہ ایک ہفتہ کے بعد دوبارہ کسی بھی اٹیچ ہسپتال کو دورہ اچانک دورہ کرکے صورتحال کا جائزہ لیں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4