کیلی فورنیا جنگلات میں لگی آگ 2 لاکھ 30 ہزار ایکڑ رقبے پر پھیل گئی

کیلی فورنیا جنگلات میں لگی آگ 2 لاکھ 30 ہزار ایکڑ رقبے پر پھیل گئی

نیویارک ( آن لائن ) امریکی ریاست کیلی فورنیا کے جنگلات میں 8 روز سے لگی آگ 2 لاکھ 30 ہزار ایکڑ رقبے پر پھیل گئی، 800 مکانات اور عمارتیں جلنے سے دولاکھ سے زائد افراد بے گھر ہوگئے اور 5 ہزار سے زائد فائر فائٹرز آگ سے لڑنے میں مصروف ہیں۔یہ کیلی فورنیا کی تاریخ کی پانچویں بڑی آتشزدگی ہے اور اس آگ کو ’’تھوماس فائر‘‘ کا نام دیا گیا ہے۔جنوبی کیلی فورنیا کے جنگلات میں لگی یہ آگ 2 لاکھ 30 ہزار ایکڑ رقبے پر پھیل چکی ہے جو کہ امریکی شہروں نیویارک اور بوسٹن کے مشترکہ رقبہ سے بھی زیادہ ہے۔تیز ہوا اور دھوئیں کے بادلوں کی وجہ سے فائر فائٹرز کو اپنے کام میں مشکلات کا سامنا ہے، آگ کے سبب بہت بڑے علاقے میں بجلی کی فراہمی منقطع ہوچکی ہے۔محکمہ موسمیات نے کہا ہے کہ ہوا میں نمی کا تناسب کم ہونے اور تیز ہوا کے سبب آگ مزید پھیل رہی ہے جب کہ اگلے 10 روز تک بارش کے کوئی آثار نظر نہیں آرہے ۔حکام کے مطابق وینچورا اور سانتا باربرا کاؤنٹیز میں ہنگامی حالت نافذ کرتے ہوئے 94 ہزار سے زائد مزید شہریوں کو اپنے گھر لازمی طور پر چھوڑنے کے احکامات جاری کردیے گئے ہیں۔قبل ازیں کیلی فورنیا کے جنگلات میں 1932میں ایسی آگ لگی تھی لیکن تھوماس فائر اس سے کہیں زیادہ بڑی ہے۔چار دسمبر سے لگی اس آگ کے سبب اب تک 2 لاکھ افراد اپنے گھروں سے نقل مکانی کرچکے ہیں۔

مزید : علاقائی