”یہ سی پیک منصوبے روک دئیے گئے ہیں کیو نکہ چین ۔۔۔“احسن اقبال نے اعلان کردیا ،پاکستانیوں کو پریشان کردیا

”یہ سی پیک منصوبے روک دئیے گئے ہیں کیو نکہ چین ۔۔۔“احسن اقبال نے اعلان ...
 ”یہ سی پیک منصوبے روک دئیے گئے ہیں کیو نکہ چین ۔۔۔“احسن اقبال نے اعلان کردیا ،پاکستانیوں کو پریشان کردیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاقی وزیر برائے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ احسن اقبال نے تصدیق کی ہے کہ سی پیک کے تحت جاری منصوبوں میں سے تین بنیادی ڈھانچوں سے متعلق منصوبوں پر کام روک دیا گیا ہے ۔ان کا کہنا ہے کہ مالی معاملات کے طریقہ کار پر نظر ثانی تک چین نے ان تین منصوبوں پر فنڈز جاری کرنا روک دئیے ہیں ۔

تفصیل کے مطابق سی پیک سے متعلق پارلیمانی کمیٹی کے چیئر مین مشاہد حسین کی زیر صدارت 25واں اجلاس ہوا جس میں احسن اقبال نے انکشاف کیا کہ چین نے مالی طریقہ کار پر نظر ثانی تک سی پیک کے تحت تین منصوبوں پر فنڈز جاری کرنا روک دئیے ہیںاور ان کا دوبارہ آغاز چین کی جانب سے اجازت نامے کے بعد ہو گا ۔مقامی اخبار ”ڈان نیوز “نے دعویٰ کیا ہے کہ احسن اقبال کمیٹی کے ممبران کو اس بات پر مطمئن نہیں کر سکے کہ چین کی حکومت کو نیا مالی طریقہ کار کیوں اختیار کرنا پڑ رہا ہے اور پرانانظام کیوں ختم کیا جا رہا ہے ،جس کی تصدیق دونوں ممالک نے کی تھی ؟۔اس حوالے سے پہلے بھی رپورٹس سامنے آرہی تھیں کہ سی پیک کے تحت سڑکیں بنانے کے تین پراجیکٹ تاخیر کا شکار ہیں کیونکہ چین نے نئی گائیڈ لائن آنے تک ان منصوبوں کے فنڈز جاری کرنے روک دئیے ہیں ۔رپورٹس کے مطابق چین نے جن منصوبوں پر فنڈز کا اجرا روکا ہے ان میں ڈیر اسماعیل خان سے ژوب تک 210کلو میٹر روڈ ، رائے کوٹ سے تھہ کوٹ تک قرا قرم ہائی وے کا 136کلو میٹر حصہ اور خضدار سے باسیمہ تک 110کلو میٹر روڈ کے منصوبے شامل ہیں ۔

پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں احسن اقبال نے سی پیک سے کے تحت پاکستان اور چین کے درمیان متفقہ لانگ ٹرم منصوبے سے متعلق بھی بریفنگ دی ۔ان کا کہنا تھا کہ اس منصوبے کی اجازت 18ماہ کی مشاورت کے بعددی گئی اور چین کو یہ منصوبہ بھیجنے سے قبل تمام صوبوں سے بھی شیئر کیا گیا ۔

ڈیلی پاکستان کا یو ٹیوب چینل سبسکرائب کر نے کے لیے یہاں کلک کریں

مزید : قومی /اہم خبریں