چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کا ہائی وے دفتر‘ پولیس لائن کا دورہ ‘ ظہرانے میں شرکت

چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کا ہائی وے دفتر‘ پولیس لائن کا دورہ ‘ ظہرانے میں ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان (خبر نگار خصوصی) چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ ملک انوارالحق نے ہائیکورٹ اور ضلع کچہری کی توسیع کے لئے محکمہ ہا ئی وے(بقیہ نمبر22صفحہ12پر )

کے دفتر اور پولیس لائن کا دورہ کیا اور ملتان میں مصروف دن گذارنے کے بعد روانہ ہو گئے ۔ تفصیل کے مطابق فاضل چیف جسٹس کو گذشتہ صبح ہائیکورٹ ملتان بینچ پہنچنے پر پولیس کے خصوصی دستے کی جانب سے گارڈ آف آنر پیش کیا گیا جس کے بعد فاضل چیف جسٹس نے ملتان بینچ میں عدالتی امور سرانجام دینے کے بعد ہائیکورٹ بار کی تقریب میں شرکت کے بار کے مطالبہ پر ہائیکورٹ کی توسیع کے لئے متصل محکمہ بلڈنگ اور صوبائی ہائی وے کے دفاتر کی عمارت کا دورہ کیا جہاں صدر بار خالد اشرف خان کی جانب سے انہیں بریفنگ دی گئی کہ اس عمارت کو شامل کرنے کے بعد زیادہ فنڈز کی ضرورت نہیں ہے اور صرف معمولی تزئین و آرائش سے مزید عدالتیں، دفاتر اور پارکنگ قائم کی جا سکتی ہے جبکہ فاضل چیف جسٹس نے عمارت کی منتقلی بارے افسران سے بھی معلومات حاصل کیں۔ دریں اثناء فاضل چیف جسٹس نے ملتان بینچ کے ملازمین کی جانب سے دئیے گئے ظہرانے میں شرکت کے بعد ضلع کچہری ملتان پہنچے جہاں انہیں پولیس کے دستے کی جانب سے گارڈ آف آنر پیش کیا گیا اور بار عہدیداروں، ایڈیشنل سیشن ججز اور سینئر سول ججز نے ان کا استقبال کیا اور پھولوں کا گلدستہ بھی پیش کیا۔ بعد ازاں ملتان کے ضلعی و تحصیل عدالتوں کے ججز سے ملاقات کے بعد ضلع کچہری اور پولیس لائن کا دورہ کیا۔ اس موقع پر صدر ہائیکورٹ بار نے بتایا کہ ضلع کچہری میں 97 عدالتوں کی ضرورت ہے جبکہ 54 عدالتیں خستہ حالت میں موجود ہیں اور پولیس لائن میں ڈولفن و پولیس فورس کے لیے اتنی بڑی جگہ ہے جو ضرورت سے زائد ہونے کی وجہ سے عدالتوں کی توسیع کے لئے ملنی چاہیے۔ فاضل چیف جسٹس کے استفسار پر سی پی او ملتان منیر مسعود مارتھ نے بتایا کہ یہاں ڈولفن فورس کے 170 اہلکار ہیں اور ان کا علیحدہ انچارج بھی ہے جبکہ پولیس لائن میں ایلیٹ فورس کی رہائش اور دفتر بھی ہے جبکہ چیف جسٹس پاکستان نے بھی اس جگہ کا دورہ کیا تو ان کو بتایا گیا تھا کہ پولیس لائن کا شہر میں ہونا ضروری ہے اور ایمرجنسی میں اسی جگہ سے موومنٹ ہوتی ہے اس لئے اگر پولیس لائن کو منتقل کیا گیا تو شہریوں کے لئے بھی مسائل پیدا ہوں گے۔ ان مواقعوں پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کرنے کے ساتھ موبائل جیمر بھی لگائے گئے تھے۔ بعد ازاں فاضل چیف جسٹس بذریعہ سڑک واپس لاہور روانہ ہو گئے ہیں۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ ملک انوار الحق نے ہائیکورٹ بار ملتان کے مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ اس سلسلے میں گذشتہ روز ہائیکورٹ بار کے صدر خالد اشرف خان کی جانب سے مطالبات پیش کئے گئے کہ ضلع کچہری کی موجودہ جگہ پر توسیع کے لئے سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں حکومت پنجاب کو پولیس لائن کی جگہ کی ایکوزیشن کرنے اور فنڈز دینے کے لئے فوری حکم جاری کیا جائے جس طرح راولپنڈی میں پولیس لائن کی جگہ لے کر دہلیز پر انصاف فراہم کیا جائے نیز ہائیکورٹ کی توسیع کے لئے متصل محکمہ بلڈنگ کی عمارت لے کر شامل کی جائے۔ اس طرح لودھراں اور ساہیوال کے مقدمات کی دائری کا دیگر بینچز میں اختیار کا نوٹیفکیشن واپس لیا جائے۔
دورہ

Back to Conversion Tool