لاڑکانہ میں کتے کے کاٹے سے شدید زخمی6سالہ حسنین 27 دن بعد جان کی بازی ہار گیا،مقامی قبرستان میں تدفین

لاڑکانہ میں کتے کے کاٹے سے شدید زخمی6سالہ حسنین 27 دن بعد جان کی بازی ہار ...
لاڑکانہ میں کتے کے کاٹے سے شدید زخمی6سالہ حسنین 27 دن بعد جان کی بازی ہار گیا،مقامی قبرستان میں تدفین

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) لاڑکانہ میں کتے کے کاٹے سے شدید زخمی6سالہ حسنین جان کی بازی ہارنے کے بعد مقامی قبرستان میں آہوں اور سسکیوں کے درمیان سپرد خاک،نماز جنازہ اور تدفین کے موقع پر انتہائی رقت آمیز مناظر ،وزیر اعلیٰ سندھ نے تیس ہزار،گورنر سندھ نے پچاس ہزار روپے اور سہیل انور سیال نے بھی 25 ہزار کی مالی مدد کی،والد غلام حسین بگھیو کی گفتگو ۔

تفصیلات کے مطابق لاڑکانہ میں کتے کے کاٹنے سے زخمی ہونے والا 6 سالہ حسنین 27 روز موت و حیات کی کشمکش میں رہنے کے بعد کراچی کے ہسپتال این آئی سی ایچ میں دم توڑ گیا ،لاڑکانہ میں چھ کتوں نے حسنین کے گال، ناک اور کان سمیت آدھا چہرہ چبا ڈالا تھا جس پر اسے کراچی منتقل کیا گیا تھا۔ قومی ادارہ برائے اطفال این آئی سی ایچ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر جمال رضا نے بتایا کہ حسنین ہسپتال میں27دن سے زیر علاج تھا اور اس کی تین سرجریز بھی کی گئیں لیکن وہ جانبر نہ ہوسکا۔ 

معصوم حسنین کی میت اس کے آبائی علاقےگاؤں حبیب بگھیو میں پہنچائی گئی تو دور دور سے لوگ اس کے گھر جمع ہو گئے،اس موقع پر کئی رقت آمیز مناظر دیکھنے میں آئے ،نماز جنازہ میں بھی بڑی تعداد میں لوگ شریک ہوئے بعد ازاں مقامی قبرستان میں تدفین کی گئی ۔نماز جنازہ کے بعد حسنین  کے والد  غلام حسین بگھیو نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہکراچی میں میرے بچے کا علاج بہتر ہو رہا تھا، ڈاکٹر سرجری کے لئے تیاری کررہے تھے،حسنین بگھیو مسلسل وینٹی لیٹر پر تھا مگر زندگی نے اس کا ساتھ نہ دیا،،دوران علاج حسنین بگھیو کی طبیعت بدستور خراب رہی دوران علاج ہی وہ دم توڑ گیا۔اُنہوں نے کہا کہ سائیں سرکار وزیر اعلیٰ سندھ نے تیس ہزار، گورنر سندھ نے پچاس ہزار روپے اور سہیل انور سیال نے بھی 25 ہزار کی مالی مدد کی۔

 دوسری جانب وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے حسنین کے انتقال پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اللہ پاک والدین کو صبر عطا فرمائے، ہم نے تو ہر طرح سے کوشش کی تھی کہ بچے کی جان بچائی جائے تاہم اللہ کی مرضی سے وہ جانبر نہ ہو سکا۔

مزید : علاقائی /سندھ /لاڑکانہ