ایف آئی اے نے عدالتی احکامات پر بی آرٹی منصوبے کی تحقیقات شروع کردیں

ایف آئی اے نے عدالتی احکامات پر بی آرٹی منصوبے کی تحقیقات شروع کردیں
ایف آئی اے نے عدالتی احکامات پر بی آرٹی منصوبے کی تحقیقات شروع کردیں

  



پشاور(ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف ائی اے) نے عدالتی احکامات پر پشاور بس ریپڈ ٹرانزٹ (بی آرٹی) منصوبے کی تحقیقات شروع کردیں ہیں۔

ذرائع کے مطابق ایف آئی اے اینٹی کرپشن نے ایڈیشنل ڈائریکٹر کی سربراہی میں 5 رکنی ٹیم تشکیل دےدی ہے جس نے پشاورڈیویلپمنٹ اتھارٹی سے ریکارڈ طلب کرلیا ہے۔اس ضمن میں ایڈیشنل ڈائریکٹر ایف آئی اے ڈاکٹر میاں سعید کا کہنا ہے کہ تحقیقات کےلئے تکنیکی ماہرین کی خدمات حاصل کر سکتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ عدالتی احکامات کے مطابق تمام 35 سوالات پرتحقیقات کی جائے گی، کوشش کریں گے 45 دن میں بنیادی نکات کی نشاندہی کر لیں۔

ایف آئی اے نے  پشاورہائیکورٹ کے حکم پر تحقیقات شروع کی ہے ایف آئی اے نے پشاور میں بی آرٹی منصوبے کی تحقیقات کے لئے این ایچ اے اور پیپراسے ماہرین مانگ لئے تحقیقات کی نگرانی ایڈیشنل ڈائریکٹر ایف آئی اے کے پی ڈاکٹر میاں سعید کررہے ہیں ،ماہرین پتہ چلائیں گے کہ بی آرٹی کا ٹھیکہ رولز کے مطابق دیا گیا یا نہیں،پشاورہائیکورٹ نے 14نومبر کو45روز میں تحقیقات کرنے کا حکم دیاتھااورپشاورہائیکورٹ نے بی آرٹی منصوبے سے متعلق35 سوالات اٹھائے تھے،کیا بی آر ٹی منصوبے میں معیاری میٹریل سامان استعمال کیاگیاتھااوربسیں کب منگوائی گئی ہیں اور ان کی پارکنگ کیلئے مناسب انتظامات کئے گئے ہیں یا نہیں ،بی آرٹی منصوبہ ٹرانسپورٹ کی بجائے پی ڈی اے کو کیوں دیاگیا۔

مزید : قومی /علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور