شامی اپوزیشن جنیوا اجلاس مشترکہ مذاکراتی کمیٹی کی تشکیل پر متفق

شامی اپوزیشن جنیوا اجلاس مشترکہ مذاکراتی کمیٹی کی تشکیل پر متفق

  

ریاض(این این آئی)شام میں جاری بحران کے حل کے سلسلے میں جنیوا میں اقوام متحدہ کی زیرنگرانی 20 فروری کو ہونے والے مذاکرات میں شرکت کے لیے شامی اپوزیشن نے متفقہ مذاکراتی وفد تشکیل دینے پر اتفاق کیا ہے۔چوتھے جنیوا اجلاس کے انعقاد سے 10 روز پہلے شامی اپوزیشن کا ایک اہم اجلاس سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں ہوا جس میں شام کی سپریم مذاکراتی کونسل، شامی نیشنل الائنس کے ارکان کے ساتھ ساتھ عسکری تنظیموں کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔ریاض میں شامی حزب اختلاف کے اجلاس کے دوران جنیوا میں ہونے والے مجوزہ مذاکرات کو کامیاب بنانے پرغور وخوض کیا گیا۔حزب اختلاف کے اعہدیدار نے بتایا کہ ریاض میں ہونے والے اجلاس میں شامی اپوزیشن کے تمام دھڑوں نے جنیوا مذاکرات میں حصہ لینے کے لیے مشترکہ مذاکراتی وفد تشکیل دینے سے اتفاق کیا ہے۔

اپوزیشن کے نیشنل الائنس کے رکن ھشام مروہ نے بتایا کہ اس اجلاس کے حتمی فیصلوں کے بارے میں کچھ کہنا قبل از وقت ہے۔ تاہم انہوں نے کہا کہ اجلاس میں شریک تمام دھڑوں، سیاسی اور انقلابی گروپوں نے جنیوا میں ہونے والے مذاکرات کے لیے مشترکہ وفد تشکیل دینے سے اتفاق کیا ہے۔اپوزیشن کی جانب سے تجویز پیش کی گئی ہے کہ جنیوا اجلاس کے دوران وہ شام میں پرامن انتقال اقتدار اور پہلے جنیوا اجلاس میں طے کردہ نکات پر عمل درآمد کا مطالبہ کیا جائے گا۔قبل ازیں آستانا میں ہونے والے مذاکرات میں شامل شامی اپوزیشن گروپوں کے مشترکہ مندوب محمد علوش نے کہا تھا کہ جمعہ اور ہفتہ کے ایام میں سعودی عرب میں ہونے والے اجلاس میں اپوزیشن کے تمام دھڑے شرکت کریں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ شامی حزب اختلاف خود کومتحد رکھتے ہوئے آئندہ کے مذاکراتی مراحل کے لیے یکساں موقف اپنانے اور متفقہ مذاکراتی وفد تشکیل دینے کی کوشش کررہی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -