جب بھی حقیقی احتساب ہوا، ایوانوں میں بیٹھے مگر مچھ جیلوں میں سڑیں گے: سراج الحق

جب بھی حقیقی احتساب ہوا، ایوانوں میں بیٹھے مگر مچھ جیلوں میں سڑیں گے: سراج ...

  

فیصل آباد (اے این این ) امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ جب بھی حقیقی احتساب ہواتو ایوانوں میں بیٹھے مگر مچھ جیلوں میں سڑیں گے۔ دولت کے بل بوتے پر عوام پر مسلط ہونے والے حکمران کٹہرے میں کھڑے ہونگے، لٹیروں کا یہ ٹولہ خود کو احتساب سے بچا نہیں سکتا،مالی کرپشن کے ساتھ ساتھ اخلاقی اور نظریاتی کرپشن کے مجرموں کا یوم حساب قریب ہے اوربہت جلد غربت اورمہنگائی کے ستائے عوام کے ہاتھ ان کے گریبانوں تک پہنچنے والے ہیں۔ کرپشن وہی ختم کرسکتا ہے جس کا اپنا دامن اس سے پاک ہو پاکستان کسی وڈیرے یا جاگردار نہیں ایک وکیل نے بنایا تھا۔وکلا ء کرپشن سے پاک خوشحال پاکستان کے قیام کے لئے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں ،جماعت اسلامی کی نواز شریف سے کوئی ذاتی لڑائی نہیں ،اگر مجمع میں کھڑے حضرت عمر کا احتساب ہو سکتا ہے تو نواز شریف کا کیوں نہیں ،نواز شریف بتائیں کہ دولت کہاں سے آئی،امریکہ ملک میں شیعہ سنی کی تقریق پیدا کرکے ہمیں لڑانا چاہتا ہے،امریکی صدر ٹرمپ کے دشمن امت مسلمہ کے حکمران نہیں عوام ہیں،کرپشن زدہ حکمرانوں نے سیاست کو پیسے کا کھیل بنا دیا ہے،آج سپریم کورٹ کہہ رہی ہے کہ حقیقی احتساب ہوا تو جماعت اسلامی کے سوا کوئی نہیں بچے گا۔قوم کو باکردار قیادت دینا چاہتے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ بار میں وکلاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر صدر باررانا علی عباس خان،جنرل سیکرٹری میاں مہران طاہر،پنجاب اسمبلی میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر ڈاکٹر سید وسیم اختر،جماعت اسلامی کے ضلعی امیر سردارظفر حسین خاں ایڈووکیٹ،جنرل سیکرٹری رانا وسیم ایڈووکیٹ بھی موجود تھے۔سراج الحق نے کہا کہ عالمی استعمار اسلام اور مسلمانوں کے خلاف متحدہورہا ہے ،ٹرمپ نے حلف لینے کے بعد سب سے پہلے مسلمانوں کو امریکہ اور مغرب کا دشمن قرار دیا اور دنیا سے اسلامی دہشت گردی کو ختم کرنے کواولین ترجیح قرار دیالیکن افسوس آج دنیا میں کوئی اسلامی حکومت یا شخصیت ایسی نہیں جو امت کی نمائندگی کرے ،دشمن ہماری مسجدوں کے میناروں سے ڈرتا اور منبر و محراب سے اٹھنے والی آواز کو دبانے کے لیے دشمن ہمیں رنگ و نسل اور مسلکوں کی بنیا د پر تقسیم کرنے کے درپے ہے ۔ امریکہ کے ذہنی غلام قوم کو امریکہ اور بھارت سے ڈرانے اور بھارت کی بالا دستی قبول کرنے کے مشورے دے رہے ہیں ،دشمن کی کوشش ہے کہ مسلمان آپس میں لڑیں ،عالم اسلام انتشار کا شکار ہواور اسلام کے بڑھتے ہوئے قدم رک جائیں مگر ان کی یہ خواہش پوری نہیں ہوگی ۔ عالمی اسٹیبلشمنٹ کے مہرے احتساب کے نام سے تھر تھر کانپ رہے ہیں ،جب بھی حقیقی احتساب ہواتو ایوانوں میں بیٹھے بڑے بڑے مگر مچھ جیلوں میں ہونگے اور دولت کے بل بوتے پر عوام پر مسلط ہونے والے حکمران کٹہرے میں کھڑے ہونگے۔ حکمرانوں نے ہمیشہ قوم کو دھوکہ دیااور عالمی سامراج کی غلامی کی ۔ حکمران ملک کو ساتھ خیانت کررہے ہیں ۔ قومی اداروں کو تباہ کرنے والے نااہل حکمرانوں نے قوم کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کی غلامی کی زنجیروں میں جکڑ دیاہے ۔ بار بار حکومت میں آنے والے جاگیردار اور سرمایہ دار قومی خزانے کو

لوٹ کر بیرون ملک منتقل کرتے رہے اور عوام کو مسائل کی بھٹی میں جھونک دیا ۔ پانچ مرلے کے مکان میں رہنے والے اب دو دوایکڑوں پر محیط بنگلوں میں رہتے ہیں ۔ غریب ملک پر حکومت کرنے والوں کا رہن سہن اور کلچر ہمارے ساتھ نہیں ملتا ۔ پہلے ان کے بڑے ہمارے بڑوں پر حکومت کرتے رہے ، 70سال سے ان نام نہاد جمہوریت پسند حکمرانوں نے قوم کو اپنا غلام بنار کھاہے ۔ ملک پر ایک ظلم و جبر کا راج ہے ۔ مزدوروں اور کسانوں کو اپنا خون پسینہ بہانے کے باوجود پیٹ بھر کر کھانا نہیں ملتا ۔ ان کی محنت کا پھل کارخانہ دار اور جاگیردار کھا رہے ہیں ۔ ہم استحصالی اور طبقاتی نظام کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنا چاہتے ہیں ۔ ملک کی تقدیر صرف دیانتدار قیادت ہی بدل سکتی ہے جوصرف جماعت اسلامی کے پاس ہے۔ بہت جلد امریکی غلاموں کا دور ختم اور حضرت محمد ﷺ کے غلاموں کا دور شروع ہونے والا ہے۔ سراج الحق نے وکلاء کو یقین دلایا کہ فیصل آباد میں ہائی کورٹ کے پنچ کے قیام کے لئے جماعت اسلامی ان کے شانہ بشانہ عملی جدوجہد میں شریک ہوگی ۔

مزید :

صفحہ آخر -