فارٹا کے 3پارلیمنٹرین کے کہنے پر انضمام قبول نہیں سیاسی قائدین اپنے مفاد کی بات کرتے ہیں:گرینڈ جرگہ

فارٹا کے 3پارلیمنٹرین کے کہنے پر انضمام قبول نہیں سیاسی قائدین اپنے مفاد کی ...

  

خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)فاٹا کے تین پارلیمنٹرین کے کہنے پر انضمام قبول نہیں،پاکستان اور سیاسی پارٹیوں میں جمہوریت کہا ں ہے ،سیاسی قائدین اپنے مفاد کی خاطر فاٹاکو صوبے میں ضم کرنے کی باتیں کر رہے ہیں ،پولیٹکل انتظامیہ انضمام کی باتیں کرنے والوں کے مراعات بند کر یں ،ملک میں الیکشن اصلاحات ہو رہے ہیں سب سے زیادہ قبائلی علاقوں میں الیکشن اصلاحات کی ضرورت ہے کیونکہ الیکشن کے دوران امیدواران کروڑوں روپے خرچ کر رہے ہیں ،ہفتے کے دن جمرود میں انظمام کے خلاف جمرود میں ایک بڑا جلسہ منعقد کر ئینگے ،فاٹاملکان اور مشران کا گرینڈ جر گے سے خطاب پشاور باغ ناران میں فاٹا گرینڈ جر گے سے خطاب کر تے ہو ئے ملک محمدعلی آفریدی ملک وارث آفریدی ،ملک عبدالرزاق آفریدی ،ملک صلاح الدین ،ملک خالد خان ،ملک اسرار،ملک فیض اللہ جان اور ملک خان مرجان نے کہا کہ پولیٹیکل انتظامیہ انظمام کی باتیں کرنے والوں کے مراعات بند کر یں کیونکہ ایک طرف وہ کروڑوں روپے انتطامیہ سے مراعات لیتے ہیں تو دوسری طرف وہ فا ٹا کو صوبے میں ضم کرنے کی باتیں کر رہے ہیں یہ لوگ دوغلی پالیسی چلا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ممبر قومیاسمبلی شاہ جی گل اور ناصر خان کو ووٹ فاٹا انضمام کیلئے نہیں دیا تھا بلکہ قبائلی علاقوں میں غربت ختم کرنے اور بے گھر افراد کو دوبارہ آباد کر نے کیلئے دیا تھا انہوں نے کہا قبائلی عوام میں تعلیم کی کمی ضرور ہے لیکن وہ باشعور ہیں اب ان دوغلی پالیسوں والوں جان لے گئے ہیں قومی مشران نے کہا کہ باڑہ سے منتخب قومی ممبر کو دس لاکھ روپے جرمانہ کیا ہے کہ انہوں بغیر مشورے فاٹاکو صوبے میں ضم کر نے کی حمایت کی ہے وہ قوم کو دس لاکھ روپے جرمانہ ادا کرے گا انہوں نے کہا کہ میڈیا ٹاک شوز میں سارے ہمارے مخالفین اور صوبے میں انضمام کی حمایت کرنے والوں کو بلاتے ہیں اور انکے موقف نہیں سنتے ہیں ملکان نے کہا کہ (خپلہ خاورہ خپل اختیار)اور (اللہ کی زمین پر اللہ کا نظام )کے نعرے لگانے والوں نے اپنے نعرے بھول گئے ہیں اب (خپلہ خاورہ خپل اختیار)کا نعرہ قبائلی عوام لگائیں گے ان سیاسی پارٹیوں کی سیاست قبائلی علاقوں میں ختم ہو گیا ہے اور اپنے مفاد کی خاطر قبائلی علاقوں کو صوبے میں ضم ہونے کی باتیں کر رہے ہیں کسی صورت انضمام قبول نہیں انہوں نے کہا کہ ملک سے زیادہ الیکشن کمیشن میں اصلاحات قبائلی علاقوں میں ضروری ہیں کیونکہ الیکشن کے دوران منڈی سجا دیتے ہیں اور کروڑوں روپے خر چ کر تے ہیں انہوں نے کہا کہ گز شتہ روز ممبر قومی اسمبلی شاہ جی گل نے ٹاک شو میں کہا کہ آنے والے الیکشن میں جمیعت علماء اسلام کے علماء کو عوام پتھر ماریں گے علماء انکے لئے عزت مند اور قدردان ہیں انکے لئے قبائلی عوام کے دروازے ہمیشہ کھلا رہیں گے فاٹاکے مشران قرادادکے زریعے کالاباغ ڈیم بنانے کی حمایت کی اور بتایا کہ ملک بجلی کی کمی ہے اس لئے کالاباغ ڈیم پر جلد از جلد کام شروع کریں

مزید :

کراچی صفحہ اول -