2018 ء کے دوران بھارت کی سونے کی درآمد 800 ٹن سے کم رہنے کاامکان

2018 ء کے دوران بھارت کی سونے کی درآمد 800 ٹن سے کم رہنے کاامکان

  



ممبئی (اے پی پی) ماہرین نے کہا ہے کہ 2018 ء کے دوران بھارت کی سونے کی درآمد 800 ٹن سے کم رہنے کا امکان ہے جس کی وجہ اس کی خریدار پر ٹیکسوں میں اضافہ اور نئے ٹرانسپیریسی قوانین ہیں۔ورلڈ گولڈ کونسل کی جانب سے جاری بیان کے مطابق رواں سال بھارت کی سونے کی درآمد 700 سے 800 ٹن کے قریب رہنے کی توقع ہے جو دس سال کی اوسط 840 ٹن سے کم ہے۔2017 ء کے دوران 727 ٹن سونا درآمد کیا گیا تھا۔ان کا کہنا تھا کہ سونے کی درآمد میں کمی کی اہم وجہ 2017 ء میں حکومت کی جانب سے عائد کیا گیا بھاری جی ایس ٹی ہے ۔انھوں نے کہا کہ بھارت دنیا بھر میں سونے کے استعمال کے حوالے سے دوسرا بڑا ملک ہے تاہم وہاں ٹیکسوں میں اضافے کے باعث خریداری میں کمی سے اس دھات کے نرخ متاثر ہوں گے، جن میں وسط دسمبر سے اب تک 8 فیصد تک اضافہ ہوچکا ہے۔تاہم سونے کی درآمد میں کمی بھارت کے تجارتی خسارے کو کم کرنے میں ضرور معاون ثابت ہوگی۔

مزید : کامرس