کراچی پی ایس ایل فائنل کی تیاریاں مکمل ، فل ڈریس ریہرسل

کراچی پی ایس ایل فائنل کی تیاریاں مکمل ، فل ڈریس ریہرسل
کراچی پی ایس ایل فائنل کی تیاریاں مکمل ، فل ڈریس ریہرسل

  



لاہور(سپورٹس ڈیسک)لاہور کے بعد کراچی میں پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل)کا میلہ سجانے کی تیاریاں جاری ہیں،کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں شیڈول پاکستان سپر لیگ 2018کے فائنل کے لیے شہر میں فل ڈریس ریہرسل کی گئی۔پی ایس ایل تھری کے فائنل کے لیے کی جانے والی اس ریہرسل میں پولیس، رینجرز اور آرمی کے جوانوں نے حصہ لیا جن کی تعداد 8ہزار سے10ہزار تک تھی۔فل ڈریس ریہرسل کے پہلے مرحلے میں سیکیورٹی اہلکار کراچی کے قائدِ اعظم انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے نجی ہوٹل تک ریہرسل کی بعد ازاں ہوٹل سے نیشنل اسٹیڈیم تک کی سیکیورٹی کا جائزہ لیا گیا۔اس دوران سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات بھی کیے گئے ہیں، جبکہ اسٹیڈیم کے اطراف میں پولیس رینجرز اور آرمی کے اعلی افسران بھی موجود تھے۔نیشنل اسٹیڈیم میں کسی کو بھی اندر جانے کی اجازت نہیں دی جارہی جبکہ میڈیا نمائندوں کو بھی سخت چیکنگ کے بعد اسٹیڈیم کی حدود میں داخل ہونے کی اجازت دی گئی۔یاد رہے کہ 9 فروری کو وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت پی ایس ایل فائنل کی سیکیورٹی کی تیاری سے متعلق اعلی سطح کا اجلاس ہوا تھا۔ فل ڈریس ریہرسل کے دوران سوک سینٹر، ڈالمیا، کارساز اور نیو ٹان سے اسٹیڈیم آنے والے تمام راستے بند رہے جب کہ کچھ مقامات پر شہریوں کو مشکلات کا بھی سامنا کرنا پڑا۔پی ایس ایل فائنل کی ریہرسل کے لیے سکیورٹی قافلہ ایرپورٹ سے ہوٹل اور پھر ہوٹل سے نیشنل اسٹیڈیم پہنچا جس میں غیر ملکی سکیورٹی ماہرین بھی موجود تھے، ہیلی کاپٹرز بھی فل ڈریس سکیورٹی ریہرسل کی نگرانی کی گئی جب کہ کسی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے موبائل اسپتال بھی موجود تھے جہاں ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف تعینات تھے، فائر بریگیڈ اور ایمبولینس بھی نیشنل اسٹیڈیم کے باہر موجود ہے جب کہ بم ڈسپوزل اسکواڈ اسٹیڈیم کے اندر جانے والی گاڑیوں کی تلاشی لے رہا ہے۔آئی سی سی وفد نے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیا جب کہ غیر ملکی ماہر ریگ ڈیکاسن نے بھی سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیکر اپنی رپورٹ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کو بھیجیں گے۔کراچی پولیس کے سربراہ ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر نے بھی نیشنل اسٹیڈیم کا دورہ کیا،اس موقع پر ڈی آئی جی سلطان خواجہ ،ڈی آئی جی عمران یعقوب منہاس ، ایس ایس پی ایسٹ سمیع اللہ سومرو ،ایس پی گلشن اقبال غلام مرتضیٰ بھٹو کے علاوہ قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے اعلیٰ افسران بھی ہمراہ تھے۔دورے کے بعد ڈی آئی جی سلطان خواجہ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہماری بھرپور کوشش اور اولین ترجیح ہے کہ غیر ملکی ماہرین کو سکیورٹی اقدامات پر مطمئن کرسکیں ، ہم انھیں کھلاڑیوں کو فول پروف سکیورٹی کی یقین دہانی کراتے ہیں،ہماری ان سے کئی میٹنگز ہوچکی ہیں ،گزشتہ برس نومبر سے یہ سلسلہ جاری ہے، سیکیورٹی اقدامات کی ریہرسیل بھی اسی کی کڑی ہے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی