پارلیمنٹ کو قومی سلامتی پالیسی کے بارے میں اعتمادمیں لینے کا فیصلہ

پارلیمنٹ کو قومی سلامتی پالیسی کے بارے میں اعتمادمیں لینے کا فیصلہ

  



اسلام آباد (صباح نیوز)پارلیمنٹ کو قومی سلامتی پالیسی کے بارے میں اعتمادمیں لیا جائے گا ۔ اس سلسلے میں ابتدائی مسودہ تیارکرلیا گیا ہے۔ اس مین ارکان پارلیمینٹ کی تجاویز شامل کی جائیں گی علاقائی سالمیت داخلی استحکام ،دفاعی تعاون کے رہنما اصولوں بین الاقوامی چیلنجز اور خطے کی امن سلامتی میں پاکستان کے کردار کے تناظر میں قومی سلامتی پالیسی کو حتمی شکل دی جائے گی اس معاملے پر پارلیمینٹ کی ماضی کی قراردادوں اور سفارشات سے بھی استفادہ کیا جائے گا یاد رہے کہ ماضی میں پارلیمینٹ قومی سلامتی کی پالیسی کے لئے 62نکات پر مشمتل سفارشات کو اعلان کر چکی ہے جب کہ موجودہ چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کی سر براہی میں پارلیمانی قومی سلامتی پالیسی کے لئے متفقہ مسودہ تیار کیا گیا تھا تاہم اس پر اس وقت کی حکومت ناگزیروجوہ کی بنا پر عملدرآمد نہ کرکی تھی رپورٹس کے مطابق وفاقی کابینہ کی جامع مشاورت کے بعد مئی 2018میں قومی سلامتی پالیسی کا اعلان کیا جائے گا وزیراعظم کے قومی سلامتی کے مشیرنے سفارشات کے بارے میں متعلقہ شراکت داروں سے مشاورت کی ہے ۔

قومی سلامتی پالیسی

مزید : صفحہ آخر