شام ، حکومت کے تازہ فضائی حملوں میں دو بچوں سمیت 6شہری ہلاک

شام ، حکومت کے تازہ فضائی حملوں میں دو بچوں سمیت 6شہری ہلاک

بیروت(آن لائن)باغیوں کے زیر کنٹرول پٹی پر خونریز بمباری میں وقفے کے ایک روز بعد مشرقی غوثہ میں رات گئے شامی حکومت کے فضائی حملوں میں دو بچوں سمیت 6شہری ہلاک ہوگئے ہیں ،یہ بات ایک مبصر گروپ نے اتوارکے روز کہی ہے ۔5فروری کے بعد سے صدر بشارالاسد کی حکومت نے دمشق کے نواح میں محاصرہ زدہ علاقے میں بمباری میں اضافہ کردیا ہے۔

جس میں درجنوں بچوں سمیت 245سے زائد شہری ہلاک ہوچکے ہیں ۔ دمشق حکومت نے مشرقی غوثہ پر حملوں میں نرمی لائی تھی جیسا کہ اسے اسرائیلی فضائی حملوں کا سامنا رہا ہے جوبقول اسرائیل کے ملک کے اندر حکومتی اور ایرانی اہداف کے خلاف کئے گئے ہیں ۔

برطانیہ میں قائم حقوق انسانی سے متعلق شامی مبصر گروپ کا کہناہے کہ تاہم رات سرکاری حملے دوبارہ شروع ہوگئے جس میں چھ بچے ہلاک اور 50سے زائد افراد زخمی ہوگئے۔

مبصر گروپ کے سربراہ رمی عبدالرحمان نے کہا کہ خطے کے مرکزی قصبہ ڈوما میں دو بچوں سمیت پانچ افراد ہلاک ہوئے ہیں ۔مغربی طاقتوں نے مشرقی غوثہ پر حکومت بمباری پر تشویش کا اظہا ر کیا ہے ،جہاں 40ہزار افراد 2013ء سے محاصرے کی زد میں ہیں ،انہیں خوراک اور ادویات کی شدید قلت کا سامنا ہے ۔ فرانسیسی خبررساں ادارے کیمطابق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل قرارداد کے ایک مسودہ پر غور کررہی ہے جس میں شام میں 30روزہ فائر بندی کا مطالبہ کیا جارہا ہے تاکہ انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر فوری ضرورت کی اشیاء کی فراہمی کی اجازت دی جاسکے ۔

مزید : عالمی منظر