20 دینی جماعتوں نے ناموسِ رسالتؐ ایکٹ میں ترمیم مسترد کردی

20 دینی جماعتوں نے ناموسِ رسالتؐ ایکٹ میں ترمیم مسترد کردی

  



لاہور (آن لائن) 20بڑی دینی جماعتوں کل مسالک ’’ورلڈ پاسبان ختم نبوت‘‘ کے سربراہ مولانا ممتاز اعوان، مولانامحمد الیاس چنیوٹی ،حافظ حسین احمد،پیر اعجاز ہاشمی ، فرید احمد پراچہ،علامہ زبیر احمد ظہیر،علامہ ساجد نقوی ، مولانا امیر حمزہ ، علامہ ابتسام الہٰی ظہیر، مولانا محمد یوسف احرا، مولانا زاہد الراشدی، میاں محمد اشرف عاصمی، مفتی عاشق حسین رضوی ،مولانا عبد الرؤف فاروقی ، مولانا محمد حنیف حقانی ،مولانا اصغر عارف چشتی، پیر اختر رسول قادری، علی عمران شاہین، مولانا محمد اسلم ندیم ، پیر شان علی قادری اور مولانا محمد زبیر ورک نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں قانون تحفظ ناموسِ رسالتؐ میں کسی بھی قسم کی ترمیم یا تبدیلی کو یکسر مسترد کردیا ہے انہوں نے سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے انسانی حقوق کی طرف سے توہین رسالت پر سزائے موت کا قانون ختم کرکے عمر قید کی سزا دینے کی تجویز کو آئین پاکستان سے منافی اورقرآن و سنت سے بغاوت قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ ناموسِ رسالتؐ ایکٹ میں ترمیم کی سازش درحقیقت تحفظ ناموسِ رسالتؐ قانون کو غیر موثر بنانیکی ملک دشمن یہودی و قادیانی سازش ہے جسے غیور مسلمان قطعی طور پر برداشت نہیں کرینگے مذہبی راہنماؤں نے کہا کہ قانون ناموسِ رسالتؐ میں چھیڑ خانی ملکی امن تباہ کرنے اور آگ و خون سے کھیلنے کے مترادف ہوگی لہٰذا چیئرمین سینیٹ رضا ربانی ایسی سازش کو رکوانے کیلئے اپنا فرض منصبی ادا کریں ۔

دینی جماعتیں

مزید : کراچی صفحہ اول