کیا آپ جانتے ہیں کہ 2015 میں آزاد امید وار محمد صدیق خان بلوچ کے نا اہل ہونے کے بعد جہانگیر ترین این اے 154 میں کتنے ووٹ حاصل کرکے کامیاب ہوئے تھے ؟ایسی تفصیلات کہ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

کیا آپ جانتے ہیں کہ 2015 میں آزاد امید وار محمد صدیق خان بلوچ کے نا اہل ہونے کے ...
کیا آپ جانتے ہیں کہ 2015 میں آزاد امید وار محمد صدیق خان بلوچ کے نا اہل ہونے کے بعد جہانگیر ترین این اے 154 میں کتنے ووٹ حاصل کرکے کامیاب ہوئے تھے ؟ایسی تفصیلات کہ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

  



لودھراں (ڈیلی پاکستان آن لائن )پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما جہانگیر ترین 2015 میں لودھراں کے حلقے این اے 154 میں محمد صدیق خان کے نااہل قرار دیئے جانے کے بعد ضمنی انتخاب میں ایک لاکھ 38 ہزار 719 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے تھے ۔

تفصیلات کے مطابق 11 مئی 2013 کے عام انتخابات میں این اے 154 سے محمد صدیق خان ن نے آزاد حیثیت سے انتخاب لڑا اور 86 ہزار 177 ووٹ حاصل کر کے کامیاب ہوئے تھے جبکہ جہانگیر ترین نے 72 ہزار 89 ووٹ لیے اور دوسرے نمبر پر رہے اور ن لیگ کے امیدوار سید محمد رفیع الدین بخاری نے 45 ہزار ووٹ حاصل کیے تھے تاہم دھاندلی کے الزامات کے باعث 2015 میں محمد صدیق خان نااہل ہو گئے اور ضمنی انتخاب میں جہانگیر ترین نے واضح اکثریت سے کامیابی سمیٹی اور ایک لاکھ 38 ہزار 719 ووٹ حاصل کیے جبکہ محمدصدیق نے ن لیگ کی ٹکٹ پر انتخاب میں حصہ لیا لیکن کامیاب قرار نہیں پائے اور 99 ہزار 933 ووٹ حاصل کیے ۔

این اے 154 میں جہانگیر ترین کی سپریم کورٹ کی جانب سے نااہلی کے بعد ضمنی انتخاب جاری ہے جس میں اب تک 252 پولنگ سٹیشن کے غیر سرکاری نتائج سامنے آ گئے جس کے مطابق ن لیگ کے امیدوار پیر اقبال شاہ 85 ہزار 599 ووٹ لے کر پہلے نمبر پر چل رہے ہیں جبکہ جہانگیر ترین کے بیٹے علی ترین 63 ہزار 255 ووٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں ۔

مزید : اہم خبریں /قومی