این اے 154 ضمنی انتخاب ،ن لیگ نے پی ٹی آئی کی سیٹ ’دھڑلے ‘سے چھین لی، پیپلز پارٹی کا برا حال

این اے 154 ضمنی انتخاب ،ن لیگ نے پی ٹی آئی کی سیٹ ’دھڑلے ‘سے چھین لی، پیپلز ...
این اے 154 ضمنی انتخاب ،ن لیگ نے پی ٹی آئی کی سیٹ ’دھڑلے ‘سے چھین لی، پیپلز پارٹی کا برا حال

  



لودھراں (ڈیلی پاکستان آن لائن )قومی اسمبلی کے احلقہ این اے 154 ضمنی انتخاب کا مکمل غیر سرکار ی و غیر حتمی نتیجہ سامنے آ گیاہے جس کے مطابق مسلم لیگ ن کے امیدوار پیر اقبال شاہ نے میدان مار لیاہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف اپنی ہی نشست سے ہاتھ دھو بیٹھی ہے۔نتیجہ سامنے آتے ہی ن لیگ کے کارکنوں کے جانب سے جشن منایا جارہاہے اور آتش بازی کا مظاہرہ کیا جارہاہے جبکہ تحریک انصاف کے کارکنان مایوسی کی حالت میں گھروں کو واپس لوٹ گئے ہیں۔

نجی ٹی و ی دنیا نیوز کے مطابق این اے 154 کے مکمل 338 پولنگ سٹیشنز کا غیر سرکاری و غیر حتمی نتیجہ سامنے آ گیاہے جس کے مطابق ن لیگ نے واضح اکثریت حاصل کرتے ہوئے میدان مار لیا ہے اور ایک لاکھ 13 ہزار 542ووٹوں سے کامیاب قرار پائی ہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار علی ترین 85 ہزار 933ووٹ حاصل کرکے دوسرے نمبر پر رہے ہیں اس طرح ن لیگ کو تحریک انصاف پر 27 ہزار 609 ووٹوں کی برتر ی حاصل ہوئی۔پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما 3189 ووٹ لے کر سب سے پیچھے رہے ۔ تحریک لبیک کے امیدوار ملک اظہر بہتر کارکردگی دکھاتے ہوئے نظر آ ئے اور انہو ں نے10 ہزار 212 ووٹ حاصل کیے اور تیسرے نمبر پر رہے ۔

حلقے میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 4 لاکھ 31 ہزار سے زائد ہے، پولنگ کیلئے سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے، ہر پولنگ سٹیشن پر پاک فوج کے اہلکار تعینات رہے۔ این اے 154 کے ضمنی انتخاب میں مجموعی طور پر 10 امیدوار وں نے حصہ لیا تاہم کانٹے کا مقابلہ پی ٹی آئی کے علی خان ترین اور ن لیگ کے پیر اقبال شاہ کے مابین دیکھنے میں آیا۔

یادرہے کہ یہ حلقہ تحریک انصاف کے جہانگیر خان ترین کی نااہلی کی وجہ سے خالی ہواتھا اور بلا تعطل شام 5 بجے تک پولنگ جاری رہی ، حلقے میں مرد ووٹرز کی تعداد 2 لاکھ 36 ہزار اورخواتین ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 94 ہزار سے زائدہے۔

واضح رہے کہ 11 مئی 2013 کے عام انتخابات میں این اے 154 سے محمد صدیق خان ن نے آزاد حیثیت سے انتخاب لڑا اور 86 ہزار 177 ووٹ حاصل کر کے کامیاب ہوئے تھے جبکہ جہانگیر ترین نے 72 ہزار 89 ووٹ لیے اور دوسرے نمبر پر رہے اور ن لیگ کے امیدوار سید محمد رفیع الدین بخاری نے 45 ہزار ووٹ حاصل کیے تھے تاہم دھاندلی کے الزامات کے باعث 2015 میں محمد صدیق خان نااہل ہو گئے اور ضمنی انتخاب میں جہانگیر ترین نے واضح اکثریت سے کامیابی سمیٹی اور ایک لاکھ 38 ہزار 719 ووٹ حاصل کیے جبکہ محمدصدیق نے ن لیگ کی ٹکٹ پر انتخاب میں حصہ لیا لیکن کامیاب قرار نہیں پائے اور 99 ہزار 933 ووٹ حاصل کیے ۔

مزید : قومی /Breaking News /اہم خبریں