پاک سر زمین پارٹی نے عوامی رابطہ مہم کے عمل تیز کر دیا

پاک سر زمین پارٹی نے عوامی رابطہ مہم کے عمل تیز کر دیا

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاک سر زمین پارٹی نے اپنی عوامی رابطہ مہم کے عمل کو مزید تیز کردیا۔ تنظیم میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے غیر سیاسی نوجوانوں کو زیادہ نمائندگی دی جائے گی تاکہ وہ عملی سیاست میں آکر روایتی طور طریقوں سے ہٹ کر دور جدید کے تقاضوں کے مطابق پاکستان کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کریں۔ پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال سمیت پارٹی کے مرکزی رہنماں نے تنظیم سازی کے سلسلے کا آغاز کراچی کے علاقے نیو کراچی سے کر دیا ہے جہاں عوام بالخصوص نوجوانوں سے ملاقاتوں کا سلسلہ جاری ہے۔ مختلف مقامات پر عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے سید مصطفی کمال نے کہا کہ کراچی کو بحال کرنے کے لیے اسے مسمار کرنے کے بجائے یہاں کے دیرینہ تعطل کا شکار S3، K4، کراچی سرکلر ریلوے اور گرین لائن جیسے اہم منصوبوں کو نیک نیتی کے ساتھ پایہ تکمیل تک پہنچانے کی ضرورت ہے۔ 32 سالوں میں 11 الیکشن جتوا کر بھی دیکھنے کی ضرورت ہے کہ آج مہاجر کامیاب ہوئے ہیں یا ناکام ہوگئے۔ ہم پچھلے تین سالوں سے کراچی والوں کے لیے آواز اٹھا رہے ہیں اور یہاں پر بسنے والوں کیلئے صاف پینے کے پانی کا مطالبہ کر رہے ہیں، پی ایس پی نے عوام کے لیے کراچی پریس کلب کے باہر بلا تعطل 18 روز تک پینے کے صاف پانی کے حصول کے لیے دھرنا دیا، لاٹھی چارج اور شیلنگ برداشت تک برداشت کی، اگر حکمران ہماری بات مان لیتے تو کراچی سمیت سندھ بھر میں آج یہ جان لیوا ٹائیفائیڈ نہ پھیلتا جس کا علاج دستیاب ادویات سے ممکن نہیں رہا اور جس کے نتیجے میں اب تک کئی قیمتی انسانی جانیں ضائع ہو گئیں۔ آج کراچی سمیت سندھ بھر کے والدین بچوں کو زہریلا پانی پلانے پر مجبور ہیں، والدین کو سوچنا پڑتا ہے کہ بچوں کو صاف پانی پلائیں یا دودھ کیونکہ غریب لوگ منرل واٹر خریدنے کی سکت نہیں رکھتے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر