سابق حکمران یہ کام نہ کرتے تو حج مفت کردیتے ، وزیر اعظم نے حج اخراجات میں اضافے کی وجہ بیان کردی

سابق حکمران یہ کام نہ کرتے تو حج مفت کردیتے ، وزیر اعظم نے حج اخراجات میں ...
سابق حکمران یہ کام نہ کرتے تو حج مفت کردیتے ، وزیر اعظم نے حج اخراجات میں اضافے کی وجہ بیان کردی

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان نے کہاہے کہ مشکل وقت ضرورت ہے لیکن ملک کا مستقبل روشن ہے ، سابق حکمران ایسے حالات پیدا نہ کرتے تو حج مفت کردیتے ، حکومت اپنے اخراجات کم کررہی ہے ، ہماری سوچ ہے کہ عام آدمی کوغربت سے نکالاجائے ، شیخ رشید ریلوے میں چوری اور کرپشن سے متعلقہ کیسز نیب کوبھیجیں، اقتصادی معاشی زونز سے ملکی حالات بہتر ہونگے ۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان ریلوے لائیو ٹریکنگ سسٹم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ہماری سوچ ہے کہ عام آدمی کوغربت سے نکالا جائے، نئے پاکستان میں عام آدمی کی زندگی آسان ہونی چاہئے ، ٹرین کے ذریعے عام آدمی سفر کرتا ہے ، ہم نے عام آدمی کے سفر کو آسان بنانا ہے ، ملک سے کرپشن کا خاتمہ کرناہے ، پہلے سی پیک ایک سڑک اورچار پاور اسٹیشنوں کا نام تھا ، اب سی پیک کے تحت چین کے ساتھ مختلف شعبوں میں کام کریں گے ، پہلے کسی کو پکڑے جانے کا خوف نہیں تھا ، حکومت اپنے اخراجات کم کررہی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ میں ٹوٹل قرضہ چھ ہزار ارب لیا گیامگر پچھلے دس سالوں میں یہ قرضہ 30ہزار ارب روپے پر چلا گیا جس کا روزانہ سود ہم چھ ارب روپے ادا کررہے ہیں، دس سال میں لئے گئے قرضے لوگوں کی جیبوں میں گئے کیونکہ پتہ تھا کہ کسی نے پوچھنا ہی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہاکہ حج کے حوالے سے تنقید کی جارہی ہے لیکن اگر ملک پر اتنے قرضے نہ چڑھے ہوتے تو ہم حاجیوں کو حج پر مفت بھیجتے ۔ ان کا کہنا تھا کہ میں نے وزیر اعظم ہاﺅس کا خرچہ تیس فیصد کم کیاہے ، اس کے ساتھ ہم نے ایک آڈیٹر بھی بٹھایا ہواہے کہ ہر طرح کاخرچہ کم کرے ، میں نے تمام وزارتوں سے کہاہے کہ اپنے خرچے کم کرو، ہروزارت کودس فیصد خرچے کم کرنے ہیں کیونکہ یہ پیسہ ہمارے عوام کاہے ۔وزیر اعظم نے کہا کہ گیس کے بل اس لئے زیاد ہ آئے کہ گیس پر قرضے چڑھے ہوئے ہیں، اگر گیس کی قیمت نہیں بڑھاتے تو گیس بند ہوجائیگی ، گیس کی سالانہ پچاس ارب کی چوری ہوتی ہے ،اس لئے جو لوگ گیس کی قیمت بڑھانے پر تنقید کررہے ہیں ، ان کوشرم آنی چاہئے ۔ اس وقت مشکل وقت ہے لیکن میں لوگوں کوبتانا چاہتاہوں کہ آگے اس ملک کا مستقبل روشن ہے ، حکومت ریلوے کی مدد کریگی اور باہر سے بھی ریلوے میں سرمایہ کاری لانے کی کوشش کی جائیگی تاکہ عام آدمی کیلئے سفر میں آسانی ہو۔

وزیر اعظم نے اس موقع وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید کومخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ریلوے میں کرپشن اور چوری کے کیسز نیب کوبھیجے جائیں ، این آر او ون اور این آر او ٹو سے کرپٹ لوگوں کاخوف ختم ہوگیاہے ۔

مزید : اہم خبریں /قومی