چین میں موجود ہر پاکستانی کا خصوصی خیال رکھا جائے: وزیراعظم

چین میں موجود ہر پاکستانی کا خصوصی خیال رکھا جائے: وزیراعظم

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے کرونا وائرس کے معاملے پر ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ چین میں موجود ہر پاکستانی شہری کا خصوصی خیال رکھا جائے۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان سے معاون خصوصی زلفی بخاری کی اہم ملاقات ہوئی جس میں کرونا وائرس کے معاملے اور چین میں پھنسے پاکستانیوں کی صورتحال بارے تفصیلی گفتگو کی گئی۔مشیر صحت ڈاکٹر ظفر مرزا اور سیکرٹری خارجہ بھی اس اہم ملاقات میں موجود تھے۔ وزیراعظم کو چینی سفیر کی جانب سے اٹھائے اقدامات سے بھی آگاہ کیا گیا۔زلفی بخاری نے اس معاملے پر وزیراعظم کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستانیوں کی حفاظت کیلئے چینی حکومت کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔ چین میں موجود ہم وطنوں کی سلامتی اور تحفظ کیلئے فکرمند ہوں۔وزیراعظم نے ملاقات کے دوران ہدایات جاری کیں کہ طلبہ سمیت ہر پاکستانی شہری کا خصوصی خیال رکھا جائے وزیراعظم نے سیکرٹری خارجہ کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ،ووہان میں پاکستانی طلباء سے مسلسل رابطہ رکھنے کیساتھ ساتھ ان کے اہل خانہ کو ان کی خیریت سے آگاہ رکھا جائے۔وزیراعظم نے وزارت اوورسیز کے اقدامات پر بھی اطمینان کا اظہار کیا۔بعدازاں معروف کمپنی میکنزی کے گلوبل مینیجنگ ڈائریکٹر کیون سنیدر سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ حکومت کی اولین ترجیح کاروبار میں سہولت اور سیاحت کا فروغ ہے، موجودہ حکومت نے کاروباری طبقے کو ہر ممکن سہولت کا عزم کر رکھا ہے، کوشش ہے کاروبار میں آسانیاں پیدا ہوں اور معاشی عمل تیز ہو سکے، عمل درآمد سے سماجی و معاشی ترقی ممکن بنائی جا سکے گی، پاکستان میں سیاحت کا بے شمار پوٹینشل موجود ہے، سیاحت کے فروغ سے بہتر زرمبادلہ کمانے میں مدد ملے گی۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان سے معروف کمپنی میکنزی کے گلوبل مینیجنگ ڈائریکٹر کیون سنیدر کی ملاقات ہوئی۔ ملاقات میں وزیر اعظم کو مختلف شعبوں میں منصوبہ بندی اور انتظامی امور میں معاونت پر بریفنگ دی گئی۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ماضی میں حکمران طبقے نے مفادات کے لیے کرپشن کی اور اداروں کو کمزور کیا۔ انہوں نے کہا کہ سول اداروں کے کمزور ہونے سے کرپشن اور عوام کی تکالیف میں اضافہ ہوا، حکومت کی جانب سے عوامی مفادات کے تحفظ کی صلاحیت متاثر ہوئی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت کا بے شمار پوٹینشل موجود ہے، سیاحت کے فروغ سے بہتر زرمبادلہ کمانے میں مدد ملے گی۔ نوجوانوں کے لیے نوکریوں کے بے شمار مواقع پیدا ہوں گے۔وزیر اعظم نے کہا کہ توانائی کے شعبے میں ماضی کے حکمرانوں کی بد انتظامیاں سامنے آئی ہیں، ناقص منصوبہ بندی کا سارا بوجھ عوام کو برادشت کرنا پڑ رہا ہے، توانائی کے شعبے میں مختلف مد میں ہونے والے نقصانات کو روکنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ عوام پر پڑنے والے بوجھ میں کمی لانا حکومت کی اولین ترجیح ہے، زمینی حقائق مدنظر رکھ کر مرتب کی جانے والی سفارشات کا خیر مقدم کیا جائے گا۔علاوہ ازیں وفاقی وزیرفواد چودھری نے وزیراعظم سے ملاقات میں مطالبہ کیاہے کہ مولانا فضل الرحمان کے اعتراف کی روشنی میں مکمل انکوائری ہونی چاہیے اور آرٹیکل چھ کا مقدمہ چلایا جائے۔ وزیراعظم عمران خان سے وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری نے ملاقات کی، جس میں مختلف امور زیر غور آئے۔وزیراعظم عمران خان سے وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے بھی ملاقات کی جس میں سپریم کورٹ میں ریلوے کیس سے متعلق امور پر گفتگو ہوئی ہے، شیخ رشید احمد نے وزیرِ اعظم کو ریلوے کیس میں تیاری کے بارے میں آگاہ کیا۔وزیراعظم کی جانب سے ریلوے خسارہ کیس میں شیخ رشید کی معاونت کی بھی ہدایت کی گئی۔

وزیراعظم عمران خان

مزید : صفحہ اول