سینیٹ، انسداد منی لانڈرنگ ترمیمی بل 2019منظور

سینیٹ، انسداد منی لانڈرنگ ترمیمی بل 2019منظور

  



اسلام آباد (این این آئی،مانیٹرنگ ڈیسک)سینیٹ نے انسداد منی لانڈرنگ ترمیمی بل 2019کثرات رائے سے منظور کرلیا۔ منگل کو سینٹ اجلاس کے دور ان وزیر محصولات حماد اظہر نے انسداد منی لانڈرنگ ترمیمی بل پیش کیا جس پر جماعت اسلامی کی جانب سے مخالفت کی گئی تاہم ایوان بالا نے بل کثرات رائے سے منظور کرلیا جبکہ اپو زیشن نے وزراء کی عدم موجودگی پر ایوان سے احتجاجاً واک آؤٹ کرتے ہوئے کہاہے کہ تین تین ماہ بعد سوالات آتے ہیں اور ممبران تیاری کر کے آتے ہیں،وزراء کو ہر صورت ایوان میں آناچاہئے۔ وقفہ سوالات کے دور ان وفاقی وزیر پارلیمانی امور اعظم سواتی نے سوالوں کے جوابات دیئے۔ انہوں نے بتایاکہ سی پیک اقتصادی زون میں بلوچستان کے دو زونز شامل ہوتے ہیں،قومی انسانی حقوق کمیشن کو گزشتہ تین برسوں میں 37,618 کالز موصول ہوئیں،37618کالز انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے متعلق تھیں،معاشرے میں اگر انسانی حقوق کا تحفظ نہ ہو تو حکومت کا ہونا یا نہ ہونا بے معنی ہے،انسانی حقوق کے تحفظ بارے آگاہی مہم کیلئے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں،1996میں پہلی مرتبہ گھروں میں کام کرنیوالے بچوں کے بارے میں سروے ہوا تھا،اب موجودہ حکومت سروے کرنے جا رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ وزارت انسانی حقوق بچوں کے حقوق کے تحفظ بارے قانون بنا رہی ہے،مختلف چوراہوں پر کام کرنے والے اکثر بچے پیشہ ور ہیں،حکومت کے جس وزیر کی ذمہ داری ہو اس سے جواب طلب کیاجائے۔ سینیٹر رحمن ملک نے کہاکہ چائلڈ لیبر چاہے گھروں میں ہو یا باہر پابندی ہونی چاہئے۔چیئرمین سینیٹ نے کہاکہ سینیٹر رانا محمود الحسن سے کہئے گوشوارے جمع کرائیں،وزرا ء سے کہیں اجلاس میں آئیں،کابینہ اجلاس بیشک اہم ہے مگر سینیٹ کا اجلاس بھی اہم ہے،ایک گھنٹہ کا وقفہ سوالات ہوتا ہے اس میں بھی نہیں آتے،قائد ایوان وزراء کی وقفہ سوالات میں وزراء کی حاضری یقینی بنائیں۔ اپوزیشن نے وزرا کی عدم موجودگی پر احتجاج کرتے ہوئے ایوان سے واک آؤٹ کیا اس دور ان سینیٹر طلحہ محمو نے کورم کی نشاندہی کر دی،پانچ منٹ کیلئے گھنٹیاں بجائی گئی اس دوران ہی اپوزیشن ممبران واپس آگئے۔ایوان میں پیٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس کی تفصیلات بھی پیش کر دی گئیں جس کے مطابق فی لیٹر پیٹرول پر حکومت 35.55روپے ٹیکس وصول کر رہی ہے۔وزارت پیٹرولیم نے بتایاکہ فی لیٹر ڈیزل پر 46.28 روپے ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے، مٹی کے تیل پر فی لیٹر 20.45روپے ٹیکس وصول کیا جارہا ہے۔ بتایاگیاکہ لائٹ ڈیزل پر فی لیٹر15.28 روپے ٹیکس وصول کیا جا رہا ہے۔

سینیٹ

مزید : صفحہ اول