گلبدین حکمت یارنے افغانستان کیلئے امن منصوبہ پیش کردیا

گلبدین حکمت یارنے افغانستان کیلئے امن منصوبہ پیش کردیا

  



کابل(آئی این پی)افغانستان میں حزب اسلامی کے رہنما گلبدین حکمت یار نے طالبان کے ساتھ امن کے اپنے منصوبے کی نقاب کشائی کرتے ہوئے کہا کہ،فریقین جنگ بندی، قیدیوں کی رہائی اور طالبان کا سیکیورٹی ادروں میں ضم کیلئے ایک پیج پر آئیں، عبوری حکومت قائم کر لے نئے انتخابات ایک سال کے اندر اندر کروائیں جائیں۔ بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابقمنگل کو حزب اسلامی کے رہنما گلبدین حکمت یار نے طالبان کے ساتھ امن کے اپنے منصوبے کی نقاب کشائی کی۔منصوبے کے مطابق تنازعہ میں شامل تمام فریق مذاکرات کے دوران جنگ بندی، قیدیوں کی رہائی اور طالبان جنگجوں کو افغان سیکیورٹی فورسز میں ضم کرنے کا عہد کریں۔حکمت یار نے کہا کہ انہیں ایک عبوری حکومت کے قیام پر بھی اتفاق کرنا چاہئے جو انتخاب کرائے گی۔انہوں نے کہا کہ عبوری حکومت کے سربراہ اور اس کے کابینہ کے ممبر اگلے انتخابات میں امیدوار نہیں ہوسکتے ہیں اور نہ ہی کسی انتخابی ٹیم کی حمایت کرسکتے ہیں۔ عبوری حکومت کو ایک سال سے زیادہ نہیں چلنا چاہئے۔حکمت یار نے کہا کہ یہ مذاکرات افغانستان یا غیر جانبدار ملک میں ہونے چاہئیں۔انہوں نے کہا کہ افغان امن مذاکرات میں فریقین کو اتفاق رائے کرنا چاہئے کہ وہ افغانستان کو پراکسی جنگ کی بنیاد کے طور پر استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مذاکرات کرنے والی ٹیم چھوٹی اور پہلے سے طے شدہ حکام کے ساتھ ہونی چاہئے۔حکمت یار نے کہا کہ امن کا تعلق پوری قوم سے ہے کسی بھی فرد یا ادارے کو اس پر ویٹو لگانے کا حق نہیں ہے۔یہ منصوبہ اس وقت سامنے آیا جب امریکہ اور طالبان قطری دارالحکومت دوحہ میں مذاکرات کر رہے ہیں۔

مزید : علاقائی