نشتر ہسپتال:ادویات بحران سنگین،مریض، ورثا دربدر، ڈاکٹر ز کااحتجاج

نشتر ہسپتال:ادویات بحران سنگین،مریض، ورثا دربدر، ڈاکٹر ز کااحتجاج

  



ملتان (وقا ئع نگار) جنوبی پنجاب کی سب سے بڑی علاج گاہ نشتر ہسپتال میں ادویات بحران شدت اختیار کر گیا،لواحقین چیخ اٹھے، تفصیل کے مطابق جنوبی پنجاب کی سب سے بڑی علاج گاہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی و ہسپتال کے بیشتر وارڈز میں ادویات کے بحران نے (بقیہ نمبر46صفحہ12پر)

سر اٹھا لیا ہے،وارڈز میں زیر علاج مریضوں کو بستروں کی کمی کے ساتھ ساتھ ادویات نہ ملنے سے شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،اس وقت ہسپتال میں نزلہ کھانسی زکام گلہ خرابی چیسٹ انفیکشن اور دیگر بیماریوں میں مبتلا ہو کر آنے والے مریضوں کے لئے بنیادی اینٹی بائیوٹک ادویات،پیرا سیٹامول انجکشن،جبکہ دورے جھٹکوں سے بچاو کی ادویات کے علاوہ جان بچانے والی ادویات،آکسیجن ماسک بھی ختم ہونے کے باعث مریضوں کے علاج میں ڈاکٹرز کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے،اس حوالے سے پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن کا اجلاس گزشتہ روز صدر پروفیسر ڈاکٹر مسعود الروف ہراج کی قیادت میں گزشتہ روز ہوا اس دوران پروفیسر ڈاکٹرمسعوالرؤف ہراج نے بتایا کہ وارڈز میں آئی وی لائن،ڈرپ سیٹ،آر بی ایس سٹرپ،گلوکوز ایمپوئلز،یورین بیگ،آکسیجن ماسک تک موجود نہیں ہیں جبکہ اینٹی بائیوٹک ادویات سمیت دیگر ضروری ادویات ناپید ہو چکی ہیں، پنجاب حکومت کی جانب سے محدود بجٹ جاری ہونے کے باعث سرکاری ہسپتالوں کا برا حال ہے مریضوں کو بنیادی ادویات تک فراہم نہیں کی جا سک رہیں جبکہ لواحقین ڈاکٹرز کا گریبان پکڑتے ہیں۔ یونیورسٹی میں ٹیچنگ فیکلٹی کی شدید کمی،ڈاکٹرز کی میرٹ پر بلاتفریق اپ گریڈیشن میں تاخیر، ہاسٹلز و ڈاکٹرز کالونی کے ابتر حالات کی شدیدمزمت کرتے ہیں۔حکومت پنجاب اور نشتر انتظامیہ صورتحال کا نوٹس لیتے ہوئے فوری طور پر ادویات کی فراہمی کو یقینی بنائیں اور دیگر مسائل حل کرے بصورت دیگر اسی ہفتے احتجاجی تحریک کا آغاز کر دیا جائے گا۔

ڈاکٹر احتجاج

مزید : ملتان صفحہ آخر