مدارس کی آزادی، خود مختاری پرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا، قاری حنیف جالندھری

  مدارس کی آزادی، خود مختاری پرکوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا، قاری حنیف جالندھری

  



خانیوال(نمائندہ پاکستان) جمعیت علماء اہلسنت والجماعت خانیوال کے زیر اہتمام سالانہ علماء کنونشن امیرجمعیت مولانا پیر خواجہ محمد عبدالماجد صدیقی کی زیرصدارت جامع مسجد صدیقی ایک مینارمیں منعقد ہوا۔کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے وفاق المدارس العربیہ(بقیہ نمبر12صفحہ12پر)

پاکستان کے ناظم اعلی شیخ الحدیث مولانا قاری محمدحنیف جالندھری نے کہا کہ مدارس دینیہ کے قائدین حکومت کے ساتھ مذاکرات کے دوران بارہا یہ واضح کرچکے کہ کسی قسم کا بیرونی دباؤ ہم قبول نہیں کریں گے۔مدارس کی آزادی اور خودمختاری پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا ہمارے نصاب اور نظام کا تمام نظام ہائے تعلیم سے موازنہ کرکے دیکھ لیں ہمارے نصاب کوبارہا جانچا گیا مگر کوئی انگلی نہ اٹھاسکا۔ہمارے نظام تعلیم اور طریقہء امتحان کی شفافیت کو سرکاری ماہرین تعلیم کی مختلف کمیٹیوں اور اعلیٰ حکومتی وسرکاری شخصیات نے سراہا اور یہ اعتراف کرنے پر مجبور ہوئے کہ سالانہ اربوں روپے خرچ کرنے کے باوجود ایسامربوط نظام سرکاری سطح پر نہیں۔ہمارے نصاب کو دنیا کے مختلف ممالک کے مدارس بطورنصاب پڑھا رہے ہیں اور بیرون ممالک سے وفاق المدارس کے ساتھ الحاق کی درخواستوں کا سلسلہ سالہاسال سے جاری ہے یہ سب ہمارے نظم کے مثالی اور کامیاب ہونے کی دلیل ہے حالات اور ضرورت کے مطابق مدارس کے نصاب میں ترمیم وتبدیلی کا ہلکاپھلکا سلسلہ جاری رہتا ہے اور اس کیلئے وفاق المدارس کی نصاب کمیٹی موجود ہے جو حسب ضرورت تبدیلی وترمیم کیلئے سفارشات مرتب کرتی رہتی ہے ان سفارشات کی روشنی میں مناسب تبدیلی بھی عمل میں آتی رہتی ہے۔ہماری ضرورت کیا ہے ہم خوب جانتے ہیں اگر کوئی طاقت یہ سمجھتی ہے کہ وہ اپنے مذموم مقاصد کیلئے مدارس کے نصاب کو تبدیل کرلے گی تو اس کی خام خیالی ہے۔انہوں نے کہاکہ علماء کرام اپنے اکابر کی تاریخ کامطالعہ کریں ہمارے اکابر نے کن کٹھن حالات میں علم وحکمت کے زیور سے آراستہ ہوکر عظیم خدمات سرانجام دیں۔عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی راہنما مولانا اللہ وسایا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عقیدہ ختم نبوت اسلام کی بنیاد ہے منکرین ختم نبوت اور انکے پشتی بان مذموم سازشوں کے ذریعے اسلام اور اہل اسلام کو کمزور کرنا چاہتے ہیں کبھی انسانی حقوق کا ڈھنڈورا پیٹا جاتا ہے کبھی اقلیتوں کے حقوق کی بات کی جاتی ہے مگر کبھی یہ نہیں سوچا کہ ریاست پاکستان نے قادیانیوں کو غیرمسلم اقلیت قرار دیا وہ ریاست کا یہ فیصلہ کیوں تسلیم نہیں کرتے ریاستی قانون کو تسلیم نہ کرنے والا باغی ہوتا ہے۔ضابطے کے مطابق تمام قادیانیوں کے خلاف بغاوت کے مقدمات قائم ہونے چاہیں۔آئین میں انکے حقوق متعین ہیں مگر وہ آئین کو تسلیم نہیں کرتے پھر اس سے بڑھ کر اکھنڈ بھارت کے ناپاک نظرے پر یقین رکھتے ہوئے پاکستان کے وجود کو تسلیم نہیں کرتے۔ہمارا مطالبہ ہے کہ حکومت اپنی ذمہ داری کااحساس کرتے ہوئے قادیانیت کی مکروہ سازشوں کے سامنے بندباندھے۔مختلف مقدمات مطلوب قادیانی گرو مرزا مسرور اور دیگر مفرور قادیانیوں کو انٹرپول کے ذریعے گرفتارکرکے پاکستان لایا جائے۔انہوں نے تمام شرکاء سے عہد لیا کہ عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کیلئے اپنی تمام صلاحیتیں برائے کار لائیں اور 06 مارچ 2020 کو قلعہ کہنہ قاسم باغ ملتان میں ہونے والی ختم نبوت کانفرس میں شرکت کو یقینی بنائیں۔کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے خانقاہ مالکیہ کے سجادہ نشین مولانا خواجہ عبدالماجدصدیقی نے کہا کہ دینی مدارس مساجد خانقاہیں خیر کے مراکز ہیں۔علماء کرام دین کے خادم ہیں۔دین کے تمام شعبہ جات میں ایک دوسرے کے رفیق بنیں باہمی اتحاد واتفاق کا مظاہرہ کریں۔کنونشن سے مولانا محمد شاہ عالم ہزاروی،مفتی خالدمحمودازھر، مولانا عطاء المنعم نعیم،مولانا عبدالستار گورمانی،مولانا عطاء اللہ بخاری،مولاناطارق اسماعیل،مولانا عبداللہ عابدوڑائچ، مولانا سیف اللہ شاہ،مولانا حفیظ اللہ،قاری عبدالستار، مولانا مظہر حسین،مولانا کلیم اللہ ودیگر علماء نے بھی خطاب کیا۔ جمعیت علماء اہلسنت والجماعت کے زیر اہتمام ماہ ربیع الاول و ربیع الثانی میں سیرت اجتماعات میں نمایاں خدمات سرانجام دینے والے علماء کرام مولانا افضل عباس،مولانا محمدطیب قاسمی،قاری محمدعارف خورشید،مولانا احمدعثمان،مولانا سیف الرحمن،مولانا حفیظ اللہ،قاری عبدالستار نقشبندی،قاری یوسف سہارنپوری،حافظ نوید صدیقی،مولانا محمدعابد،قاری خلیل الرحمن،مولانا سلمان نذیر،مولانا حاجی عبداللہ،قاری سعیدربانی اور درس قرآن کریم کی تکمیل پر مولانا محمدشاہ عالم ہزاروی،مفتی خالدمحمودازھر،مفتی محمدزاہد،مولانا عطاء اللہ بخاری،مولانا سیف اللہ شاہ جبکہ نمازوں میں قرآن کریم کی تکمیل پر مولانا محمدحنیف، قاری عبیداللہ، قاری محمد رمضان،مولانا طارق جمیل،مولانا نذرالرحمن جبکہ سیرت اجتماعات کے منصفین مفتی خالدمحمودازھر، مولانا مقصود حصاروی،مولانا اقبال ساجد،مولاناحفیظ اللہ،مولانا محمدعاصم کو وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے ناظم اعلیٰ مولانا قاری حنیف جالندھری اور خانقاہ مالکیہ کے سجادہ نشین مولانا خواجہ عبدالماجد صدیقی نے ”علماء کنونشن“ کے اختتام پر حسن کارکردگی ایوارڈز اور تعریفی سرٹیفکیٹس دیئے اور علماء کی دینی خدمات کو بھی سراہا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر