بہاولپور پریس کلب میں کتاب”پاکستان بحرانوں کے مدو جزر میں“ کی تقریب رونمائی

بہاولپور پریس کلب میں کتاب”پاکستان بحرانوں کے مدو جزر میں“ کی تقریب ...

  



بہاول پور(بیورورپورٹ)معروف دانشور، مصنف، کالم اور سماجی شخصیت ملک حبیب اللہ بھٹی کی کتاب ”پاکستان بحرانوں کے مدوجزر میں“ کی تقریب رونمائی بہاول پور پریس کلب میں ہوئی۔ اس سلسلہ میں ایک پروقار تقریب کا اہتمام کیا گیا تھا۔ تقریب کی صدارت صاحب کتاب ملک حبیب اللہ بھٹہ نے کی جبکہ مہمان خصوصی وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر انجینئر اطہر محبوب تھے۔ سید تابش الوری سینئر پارلیمنٹیرین، ڈائریکٹر تعلقات عامہ رانا اعجاز محمود(بقیہ نمبر19صفحہ12پر)

، خورشید ناظر، پروفیسر ڈاکٹر مزمل ناز بھٹی،خورشید ناظر، ڈاکٹر اسلم ادیب، ڈاکٹر ذوالفقار رحمانی اور شاہد اختر بلوچ نے ملک حبیب اللہ بھٹہ کی شخصیت اور تصانیف کے حوالے سے اظہار خیال کیا۔ تقریب میں سابق اولمپئن مطیع اللہ خان، پروفیسر نواز کاوش، محبوب جعفر خان بلوچ، آسیہ ملک، پروین عطا ملک ایڈووکیٹ، جنید نذیر ناز، عمران علی رضوی، محمد اکمل چوہان، شاہد بلوچ سمیت ادیبوں، دانشوروں، صحافیوں، بیوروکریٹس، سیاسی و سماجی شخصیات اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔تقریب کی نقابت کرتے ہوئے ملک حبیب اللہ بھٹہ کے فرزند سابق چیف سیکرٹری نجیب اللہ ملک نے کہا کہ کتاب ”پاکستان بحرانوں کے مدو جذر میں“ ملک حبیب اللہ بھٹہ نے ملک کو درپیش بحرانوں کی15برس قبل پیش گوئی کر دی تھی اور ان بحرانوں سے نکلنے کا ٹھوس راستہ بھی تجویز کردیا تھا۔ وائس چانسلر اسلامیہ یونیورسٹی نے اپنے خطاب میں کہا کہ حبیب اللہ بھٹہ کی تصنیف سیاست و معیشت کے طالب علموں کے لیے انمول تحفہ ہے۔ سید تابش الوری نے کہا کہ اپنی کتاب میں حبیب اللہ بھٹہ نے پاکستان کے تناظر میں بہترین خیالات کا اظہار کیا ہے اور حالات و واقعات کے نباض کا کردار ادا کیا ہے۔ ڈائریکٹر تعلقات عامہ رانا اعجاز محمود نے کہا کہ ملک حبیب اللہ بھٹہ کی سیاسی دور اندیشی، ادبی اور صحافتی خدمات بے مثال ہیں۔ وہ ایک سچے پاکستانی اور کھرے مسلمان ہیں۔ ڈاکٹر مزمل ناز بھٹی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ملک حبیب اللہ بھٹہ کی شخصیت ایک راہ نما ستارے جیسی ہے۔ ان کی تحریریں ہمارے لیے مشعل راہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے حالات بارے اپنی کتاب میں جو پیش گوئیاں کی ہیں وہ سچ ثابت ہورہی ہیں۔ خورشید ناظر نے کہا کہ ملک حبیب اللہ بھٹہ نے اپنی کتاب میں طبقاتی تقسیم اور گورننس کے فقدان کا تجزیہ پیش کیا اور بحرانوں سے نکلنے کا ٹھوس راستہ بھی تجویز کیا ہے جو حکمرانوں کے استفادہ کے لیے اہمیت رکھتی ہے۔ڈاکٹر اسلم ادیب نے کہا کہ ملک حبیب اللہ بھٹہ کی شخصیت کسی تعارف کی محتاج نہیں۔ وہ پاکستان کا درد، دل میں رکھنے والی شخصیت ہیں ان کی تحریریں ملکی اخبارات کے علاوہ غیر ملکی میڈیا میں بھی شائع ہوئی ہیں۔ انہوں نے ان کی تصانیف کو سراہا۔سابق صدر بہاول پور پریس کلب و صدر بہاول پور یونین آف جرنلسٹ شاہد اختر بلوچ نے ملک حبیب اللہ بھٹہ کی شخصیت اور تصانیف کے حوالہ سے گفتگو کرتے ہوئے انہیں لازوال قرار دیااور ملک حبیب اللہ بھٹہ کو تقریب کا دولہا قرار دیا۔ تقریب سے صاحب کتاب ملک حبیب اللہ بھٹہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے دیانت داری سے ملک کو درپیش حالات کا تجزیہ پیش کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ہمارا پیارا وطن ہے اور اس کے لیے سوچنا، اس کے کام کرنا اور اپنے آپ کو اس کی بھلائی کے لیے وقف کرنا ہی ہمارا طرہء امتیاز ہے۔ انہوں نے نصیحت کی کہ زندگی میں دیانتدار ی اور ایمانداری کو نہ چھوڑیں اور خود کو محب وطن پاکستانی بنائیں۔ تقریب کے شرکاء میں کتاب ”پاکستان مدوجذر کے بحرانوں میں“ میں تقسیم کی گئی جبکہ صحافی و بزنس مین ڈاکٹر جام محمد اسلم اور پروین عطا ملک کی جانب سے مہمانوں میں روایتی اجرکیں اور پھول پیش کیے گئے۔ تقریب کے اختتام پر صدر بہاول پور پریس کلب نصیر احمد ناصر نے شرکائے تقریب کا شکریہ ادا کیا۔

رونمائی

مزید : ملتان صفحہ آخر