ہاکی کو ملک میں دوبارہ مقبول بنائیں گے‘طارق عزیز

    ہاکی کو ملک میں دوبارہ مقبول بنائیں گے‘طارق عزیز

  



کھڈیاں خاص(این این آئی) قومی کھیل ہاکی کو ملک میں دوبارہ مقبول بنانے اور پھر سے عالمی سطح پر اپنا لوہا منوانے کیلئے ضروری ہے کہ نہ صرف سکول اور کالج کی سطح پر اس کھیل کو بھر پور فروغ دیا جائے بلکہ کلب لیول پر بھی زیادہ سے زیادہ ایونٹس منعقد ہو کیے جائیں تا کہ ایک بار پھر ہم سنہرے ماضی کی طرح اپنا حال اور مستقبل بھی قومی کھیل میں روشن کر سکیں۔ ان خیالات کا اظہار قومی ہاکی ٹیم کے سابقہ اسٹار فارورڈ اولمپئن طارق عزیز نے ”نے کیا۔

  

انہوں نے بتایا کہ فارورڈ لائن کو ٹیم میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت حاصل ہوتی ہے اور میں نے بطور فارورڈ 225انٹرنیشنل میچز کھیل کر 87گول بھی سکول کیے جن میں دو ہیٹرکس بھی شامل ہیں َ آسٹریلیا کے ”لیور مور“ اور ہالینڈ کے ٹیر نائٹر دنیائے ہاکی کے خطرناک ترین دفاعی کھلاڑی قرار دیتے ہوئے بتایا کہ مذکورہ کھلاڑیوں کو ”ڈاج“ کرنا بڑا مشکل کام ہوتا ہے۔ جدید ہاکی کافی تیز ہو گئی ہے اور آجکل کوئی بھی ٹیم آسان نہیں ہے چاہے وہ آسٹریلیا یا جرمنی ہو یا پھر بنگلہ دیش یا چین ہو، ملک میں سیکیورٹی کے حوالے سے پوچھے گئے ایک سوال پر اولمپیئن طارق عزیز نے بتایا کہ امن وامان کیلئے موجودہ حکومت اور سیکورٹی اداروں کی طرف سے کیے گئے بھر پور اقدامات کی بدولت پاکستان عالمی کھیلوں کیلئے ایک آئیڈیل مقام بن چکا ہے۔ ملک میں کرکٹ اور اسکوائش کے عالمی مقابلے ہو ر ہے بلکہ اب تو کبڈی کا عالمی کپ بھی لاہور سمیت تین شہروں میں کامیابی سے جاری ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ موجودہ ہاکی فیڈریشن ملک میں قومی کھیل کے فروغ کیلئے ہمہ وقت کوشاں ہے مگر اس کے ساتھ ساتھ کرکٹ کی ”پی ایس ایل“ کی طرح ہاکی لیگ کا انعقاد بھی کیا جائے اور اسمیں زیادہ سے زیادہ یورپی اور دیگر ممالک کے ہاکی کھلاڑیوں کو مدعو کیا جائے تا کہ ہمارے ویران ہاکی گراؤنڈز کی رونقیں پھر سے بحال ہو سکیں

مزید : کھیل اور کھلاڑی