جنگی اقتصاد کی مخالفت کی وجہ سے نشانہ بنایا جارہا ہے، سردارحسین بابک

    جنگی اقتصاد کی مخالفت کی وجہ سے نشانہ بنایا جارہا ہے، سردارحسین بابک

  



کرک (بیورورپورٹ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ اس ملک میں جو جنگی اقتصاد کی حمایت کرتا ہے یا جنگی اقتصاد کا حصہ دار بنتاہے، وہ کھلے عام چل پھر سکتا ہے، جلسے اور جلوس کرسکتا ہے، لیکن عوامی نیشنل پارٹی کو اس لئے ٹارگٹ کیا جارہا ہے کہ یہ جنگی اقتصاد کے روکنے کی بات کرتی ہے،جنگی اقتصاد کی مخالفت کی وجہ سے مجھ جیسے ادنیٰ ورکر پر بھی چار بار حملے ہوچکے ہیں، اسفندیارولی خان پر ولی باغ میں حملہ ہوا، تو اُس کو بھی پروپیگنڈے بنا دیا گیا۔صوبائی صدر ایمل ولی خان کے چار روزہ تنظیمی دورہ کے موقع پر دوسرے روز مختلف اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے سردار حسین بابک نے کہاکہ تاریخ میں پہلی دفعہ اے این پی کے حکومت نے ریجنل لینگویجز اتھارٹی بنائی، جس میں اس صوبے میں موجود تمام چھوٹے بڑے قوموں کو اختیار دیا گیا کہ بنیادی تعلیم اپنے ہی زبان میں حاصل کریں، لیکن 2013کے بعد جب اس صوبے پر پی ٹی آئی مسلط کردی گئی تو انہوں نے اے این پی کے اس تاریخی منصوبے کو پس پشت ڈال دیا۔انہوں نے کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی اس خطے میں موجود تمام محکوم اور مظلوم قومیتوں کے حقوق کی امین ہے۔ سردار حسین بابک نے کہا کہ ہمارا صوبہ 6000میگاواٹ بجلی پیدا کررہی ہے، جس میں صرف تربیلا ڈیم 4500میگاواٹ بجلی پیدا کررہاہے۔مختلف بجلی گھروں کے مجموعی پیداوار کے اخراجات کو اگر جمع کیا جائے تو 1.15روپیہ فی یونٹ بنتا ہے، پاکستانی آئین میں زیادہ تر چیزوں کی وضاحت نہیں ہے لیکن دو چیزوں کی وضاحت موجود ہے، گیس اور بجلی، یہ جس صوبے میں پیداہوتے ہیں اس کا استعمال اور اسکی رائلٹی اسی صوبے کا آئینی حق ہے، لیکن اسکے باجود ہمارے بجلی کا نظام درہم برہم ہے اور بجلی کے اخراجات آسمان سے بات کررہی ہے، ایک روپے فی یونٹ پیدا ہونے والی بجلی ہمیں 30روپے پر دوبارہ ملتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اے جی این فارمولہ جو 1986ء میں بنا ہوا ہے اس کے تحت ہمارے وفاق کے ذمے تین سالوں کے 500ارب روپے بنتے ہیں لیکن وفاق ہمیں وہ دینے کیلئے تیار نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپنے مسائل اور وسائل پر اپنے آپکو آگاہ کرنا ہوگا، جب ہم ”خپلہ خاورہ خپل اختیار“ کا نعریٰ لگاتے ہیں تو یہ سیاسی نعرہ نہیں ہے یہ قومی نعرہ ہے۔انہوں نے کہا کہ جب نوازشریف، شہباز شریف اور حمزہ شہباز گرفتار ہوئے تومریم نواز کے ایک نعرے پر سارا پنجاب نکل گیا اور مریم نواز کے ساتھ کھڑے ہوکر اسٹبلشمنٹ کو زد وکوب کیا۔ حق خوداریت کے حصول کیلئے پختونوں کو اپنا انا بھول کر عوامی نیشنل پارٹی کے ساتھ کھڑا ہونا ہوگا

مزید : پشاورصفحہ آخر