پشاور زرعی یونیورسٹی سکول اینڈ کالج کے اساتذہ کا احتجاجی مظاہرہ

پشاور زرعی یونیورسٹی سکول اینڈ کالج کے اساتذہ کا احتجاجی مظاہرہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)زرعی یونیورسٹی اسکول اینڈ کالج پشاور کے اساتذہ نے عدم مستقلی اورکنٹریکٹ کے دورانیہ میں کمی کرنے کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا جسمیں زرعی یونرسٹی کے میل فی میل اساتذہ نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اٹھائے یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف شدید نعرہ بازی کی۔مظاہرے کی قیادت اگریکلچر سکول اینڈ کالج (بوئز و گرلز)کے اساتذہ نے کی۔اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ مذکورہ سکول میں ڈھائی ہزار طلبہ زیر تعلیم ہے تاہم یونیورسٹی کے غیر سنجیدگی او غفلت کے باعث آج تک سکول کے اساتذہ کو مستقل نہیں کیا جا سکا جبکہ اس سکول میں دیگر کلاس فور اور کلاس تھری کے ملازمین مستقل بنیادوں پر ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جو بھی وائس چانسلر اتا ہے وہ صرف اساتذہ کو یقین دہانی کراتے ہے جبکہ اج تک کسی وائس چانسلر نے اساتذہ کو مستقل کرنے کیلء عملی اقدامات نہیں کیے جبکہ دوسری طرف انتظامیہ نے اساتذہ کے ایک سال کے کنٹریکٹ کے دورانیہ کو 6ماہ تک کر کے اساتذہ کا استحصال کیا گیا ہیں جسکی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔انہوں نے کہا کہ اساتذہ کی مستقلی نہ ہونے کی جہ سے سکول کی ساکھ متاثر ہونے کا خدشہ لہذا حکومت سے ہمارا مطالبہ ہے کہ زرعی یونیورسٹی سکول اینڈ کالج کے اساتذہ کو مستقل کیا جائے اور کنٹریکٹ میں کمی کے فیصلہ کو واپس کیا جائے بصورت دیگر احتجاجی دھرنا دینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر