سٹاک مارکیٹ شدید مندی کا شکار، انڈیکس میں 77۔588کمی، سرمایہ کاروں کو ایک کھر ب 18ارب 85لاکھ روپے کا نقصان 

سٹاک مارکیٹ شدید مندی کا شکار، انڈیکس میں 77۔588کمی، سرمایہ کاروں کو ایک کھر ب ...

  

 کراچی (اکنامک رپورٹر) پاکستان سٹاک مارکیٹ میں گزشتہ تین روز سے جاری مندی چوتھے روزجمعرات کو شدت اختیار کرگئی اورکے ایس ای 100انڈیکس مزید 588.77  پوائنٹس کی کمی سے 46055.52پوائنٹس کی سطح پرآ گیاجب کہ سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص فروخت کے دباوٗ کے باعث75.42فیصد کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں کمی ریکارڈکی گئی جس کے نتیجے میں سرمایہ کاروں کوایک کھرب 18ارب 85لاکھ روپے کا نقصان اٹھانا پڑا تاہم حصص کی لین دین کے لحاظ سے کاروباری حجم بدھ کی نسبت11.15 فیصد زائدرہا۔پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں گزشتہ روزٹریڈنگ کے آغازمیں مثبت رجحان دیکھنے میں آیا اور سرمایہ کاروں کی جانب سے منافع بخش کمپنیوں کے شیئرز کی خریداری میں خریداری کے باعث تیزی رہی جس سے کے ایس ای 100انڈیکس 46937پوائنٹس کی بلند سطح پر پہنچ گیاتاہم بعد ازاں سینیٹ الیکشن اور اپوزیشن لانگ مارچ کے حوالے سے سیاسی لحاظ سے غیر یقینی ملکی صورتحال کے باعث سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص فروخت کا دباوٗ بڑھ گیا جس کے سبب مندی کا رجحان لوٹ آیا اوردوران ٹریڈنگ انڈیکس 46ہزار کی نفسیاتی حد سے گرتے ہوئے 45964پوائنٹس کی نچلی سطح پر آگیابعد میں ریکوری آنے سے 46ہزارکی نفسیاتی حد بحال ہوگئی لیکن مندی کا رجحا ن غالب رہا اورکاروبار کے اختتام پرکے ایس ای100انڈیکس588.77 پوائنٹس کی کمی سے 46055.52پوائنٹس پر بند ہواجب کہ کے ایس ای30انڈیکس254.30پوائنٹس کی کمی سے 19222.01پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 410پوائنٹس کی کمی سے 31704.67پوائنٹس کی سطح پر آ گیا۔گزشتہ روز مجموعی طور پر415کمپنیوں کا کاروربار ہوا جس میں سے92کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ313میں کمی اور 10کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔مندی کے باعث مارکیٹ کی سرمایہ کاری مالیت83کھرب99ارب26کروڑ58لاکھ روپے سے گھٹ کر82کھرب81ارب25کروڑ73لاکھ روپے ہوگئی۔قیمتوں میں اتار چڑھاؤ کے اعتبا ر سے رفحان میظ کے حصص کی قیمت299روپے کے اضافے سے 10499روپے اوراے کے ڈی کیپٹل34.89روپے کے اضافے سے 500.20روپے ہوگئی جب کہ نیسلے پاکستان80روپے کی کمی سے 6220روپے او رپاک ٹوبیکو کے حصص59روپے کی کمی سے 1540روپے ہوگئی۔ انٹر بینک میں جمعرات کو امریکی ڈالر مزید25پیسے کی کمی سے159روپے کی سطح پر آگیا جب کہ اوپن مارکیٹ میں بھی ڈالر 159.30روپے ہوگیا۔ مقامی صرافہ مارکیٹوں میں سونے کی فی تولہ قیمت مزید200روپے کی کمی سے ایک لاکھ 11ہزار800روپے ہوگئی۔صراف اینڈ جیولرز ایسوسی ایشن کے مطابق عالمی مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت 1ڈالرکے اضافے سے1842ڈالر ہوگئی تاہم مقامی صرافہ مارکیٹوں میں بھی فی تولہ سونے کی قیمت 200روپے کی کمی سے1لاکھ 11ہزار800روپے اوردس گرام سونے کی قیمت172روپے کی کمی سے95ہزار850روپے ہوگئی جب کہ چاندی کی فی تولہ قیمت 1390 روپے برقرار رہی۔

سٹاک مارکیٹ

مزید :

صفحہ آخر -