پنجاب حکومت کا اورنج ٹرین کیلئے 5ارب 62کروڑ روپے کی سبسڈی فراہم کرنیکا فیصلہ 

پنجاب حکومت کا اورنج ٹرین کیلئے 5ارب 62کروڑ روپے کی سبسڈی فراہم کرنیکا فیصلہ 

  

لاہور(عامر بٹ سے)صوبائی دارالحکومت میں چلنے والی اورنج ٹرین کیلئے 5ارب 62کروڑ روپے کی سبسڈی فراہم کی جائے گی جبکہ یومیہ تقریباً ڈھائی لاکھ کے قریب مسافر اس سفر سے مستفید ہو سکیں گے۔اس حوالے سے پنجاب حکومت کا کہنا ہے کہ لاہور اورنج لائن، جو 25 اکتوبر سے عوام کیلئے اپنے روٹ پر رواں دواں ہے، اس سے عوام کی سالانہ 60.4 ارب روپے کی رقم کی بچت ہوگی۔ منصوبے سے عام طور پر 88 88 ملین سے زیادہ افراد کو سالانہ 60 ارب روپے سے زیادہ کی اپنی ذاتی نقل و حمل کی لاگت کو بچانے میں مدد ملے گی۔ اس کے علاوہ اورنج لائن سفر کے وقت، آلودگی اور ٹریفک کی بھیڑ کو کم کرنے میں بھی مددگار ثابت ہوگی۔رپورٹ کے مطابق  25 اکتوبر سے ٹرینوں کے 27 سیٹ، ہر پانچ ٹرین کاریں / کوچیں ڈیرہ گوجراں (قائداعظم انٹرچینج کے قریب، جی ٹی روڈ) سے علی ٹاؤن (رائے ونڈ روڈ) کے درمیان چلنے کیلئے تیار ہیں۔34.8 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی، ٹرینیں، جن کی رفتار زیادہ سے زیادہ 80 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے، سفر کا اختتام 45 منٹ میں مکمل کرے گی۔ تمام ٹرینیں 27.12 کلومیٹر طویل راستے پر تمام 26 سٹیشنوں پر رکیں گی۔ان سٹیشنوں میں علی ٹاؤن، ٹھوکر، کینال ویو، ہنجروال، وحدت روڈ، اعوان ٹاؤن، سبزہ زار، شاہنور، صلاح الدین روڈ، بند روڈ، سمن آباد، گلشن راوی، چوبرجی، انارکلی، جی پی او، لکشمی، ریلوے سٹیشن، سلطانپورہ، یو ای ای ٹی، باغبانپورہ شامل ہیں۔، شالامار گارڈن، پاکستان منٹ، محمود بوٹی، سلامت پورہ، اسلام پارک اور ڈیرہ گوجراں۔دوسری جانب محکمہ ٹرانسپورٹ کا کہنا ہے کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین سی پی ای سی کے تحت پہلا ٹرانسپورٹ منصوبہ تھا جو پاک چین دوستی کی علامت اور اہل لاہور کے لئے ایک تحفہ بھی تھا۔انہوں نے کہا کہ اس منصوبے سے روزانہ تقریباً 245000 مسافروں کو 000 4سے زائد افراد کو روزگار اور جدید ترین سفری سہولت فراہم ہوگی۔

 اورنج ٹرین

مزید :

صفحہ آخر -