پشاور بلڈرز اینڈ ولپرز کا مطالبات کے حل کیلئے احتجاجی مظاہرہ

  پشاور بلڈرز اینڈ ولپرز کا مطالبات کے حل کیلئے احتجاجی مظاہرہ

  

پشاور (سٹی رپورٹر)خیبر پختونخوا ر بلڈرز اینڈ ولپرز ایسو سی ایشن نے ہاسنگ سوسائٹیز کے خلاف کارراوئیوں کو ظالمہ قرار دیتے ہوئے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پرانے منصوبے ریگولائزکیے جائیں جبکہ انتقالات پر پابندی ختم کی جائے اور مذکرات کے ذریعے مسائل حل کی جائے  تاکہ کاروبار پھر سے چل سکیں اور عندیہ دیا ہے کہ پیر تک مطالبات پورے نہ ہونے کی صورت میں احتجاجی دھرنا ددینے پر مجبور ہونگے مظاہرے کی قیادت جماعت اسلامی ضلع خیبر کے امیر شاہ فیصل اافریدی،ولی اللہ،ارباب خضر حیات اور خالدد گل سمیت کثیر تعدا د میں د یگر  ساتھیوں نے کی  جبکہ مظاہرین نے حکومت کے خلاف شدید نعرہ بازی کی  پر نکلنے پر مجبور ہونگے  مظاہرے کے شرکاء کا کہنا تھا کہ جن دفاتر اور انتقالات پر یہ لوگ پابندی لگا رہے ہیں اسکے نقشے ٹی ایم اے نے ہی پاس کیے ہیں انہوں نے کہا کہ  این او سی کا پراسس اتنا طویل کردیا گیا ہے کہ بچہ جوان ہوجائے لیکن این او سی نا ملے،غلط این او سی نہ دیں، لیکن قانونی این او سی تو ہمارا حق ہے وہ ہمیں دیا جائے انہوں نے کہا کہ دہشتگردی اور کورونا حالات میں ہم نے جہاد کیا ہے، پھر بھی درجنوں قسم کے ٹیکسز ہم پر لگائے گئے ہیں، ہم کون کون سا ادا کریں جبکہ  الٹا ہم ہی کو نقصان پہنچانے کے لیے فیصلے کیے جاتے ہیں، فراڈ اسلام آباد اور لاہور میں ہوتے ہونگے یہاں تو پشتون لوگ فراڈ کرنے والے کو چھوڑتے ہی نہیں انہوں نے کہا کہ پراپرٹی ڈیلرز اور بلڈرز کو درپیش مسائل حل کیے جائے تاکہ کاروبار کو فروغ ملے جبکہ جو بائے لاز نئے بنائیں گئے ہیں وہ نافذ کریں انہوں نے واضح کیا کہ ہم احتجاج کی جانب نہیں جانا چاہتے اور مذکرات کے ذریعے حل کیے جائے انہوں نے  وزیر اعظم عمران خان اور وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا سے مطالبہ کیا ہے کہ پرانے منصوبے ریگولائز کرنے سمیت انتقالات سے پابندی ہٹائی  جائے اور خانہ کوش کو کھولا جائے اور این او سی کے طریقہ کار کو اسان بنایا جائے تاکہ سکون سے کاروبار کر سکیں اور ہمیں درپیش دیگر مسائل حل کیے جائیں بصورت دیگر سڑکوں پر دما دم مست قلندر ہوگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -