انسداد کورونا ویکسی نیشن عمل، تعلیم و معیشت پر وباء کے منفی اثرات کا تدراک جاری: پی ٹی آئی 

انسداد کورونا ویکسی نیشن عمل، تعلیم و معیشت پر وباء کے منفی اثرات کا تدراک ...

  

 اسلام آباد(خصوصی رپورٹ) پاکستان تحریک انصاف نے کورونا وائرس ویکسین کی دستیابی،ویکسی نیشن، تعلیم اور معیشت پر اپنی جامع پالیسیاں جاری کر دیں۔سینٹرل جائنٹ سیکر ٹر ی پی ٹی آئی مصدق محمود گھمن،ایم این اے ڈاکٹر نوشین حامد اور پارلیمانی سیکرٹری نیشنل ہیلتھ سروس، ریگولیشنز و کوآرڈی نیشن، سیکرٹری معاشی امور ڈاکٹر طلعت انور تحریک انصاف نے پلڈاٹ کے زیر اہتمام پارٹی کے پالیسی ونگ کے سیشن کے بعد پریس ٹاک میں ان پالیسیوں کا اعلان کیا۔جس میں کہا گیا حکومت 2021 میں 70 فیصد اہل آبادی کو ویکسی نیشن لگا کر Herd immunity  حاصل کرنا چاہتی ہے، تقریبا 100 ملین پاکستانی ویکسین حاصل کرنے کے اہل ہیں۔ حکومت کے پاس ستمبر تک 30 ملین افراد کیلئے کورونا کی و یکسین کی خوراکیں موجود ہیں جو تقریباً 50% ٹارگٹ ہے، صحت عامہ کی سہولیات کے ذریعہ یہ ویکسین مفت لگائی جائیگی، یہ ویکسین سب سے پہلے فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کو لگائی جا ئیگی۔ 578 بالغ ویکسین کاؤنٹرز قائم ہوچکے ہیں اور حکومت کے پاس40,000 افراد کو روزانہ ویکسین لگانے کی گنجائش ہے۔ تمام صوبائی سٹیک ہولڈرز کیساتھ مشاورت کے بعد فرنٹ لائن ہیلتھ کیئر ورکرز کیلئے واضح معیار کی تعریف کی گئی ہے، ریسورس مینجمنٹ سسٹم (آر ایم ایس) تشکیل دیا گیا ہے تاکہ وہ صحت کی سہولیات کے ذریعہ اندراج کرا سکیں۔کو ر و نا وائرس میں تعلیم سے متعلق پی ٹی آئی کی پالیسی میں کہا گیا ہے کہ سکول کی بندش کے دوران وفاقی حکومت،ٹیلی سکول کے ذریعہ ڈیجیٹل لرننگ مواد پیش کرنے کیلئے تیزی سے آگے بڑھنے میں کامیاب رہی۔ ٹیلی سکول کا مواد بڑے ایڈ ٹیک پارٹنرز سباق فاؤنڈیشن، تعلیم آباد، سٹیزن فاؤنڈیشن، پنجاب آئی ٹی بورڈ، علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی اور نالج پلیٹ فارم تعلیم نے مفت فراہم کیا، حکومت نے بین الصوبائی وزیر تعلیم،کانفرنس کے پلیٹ فارم کے ذریعے قومی اتفاق رائے اور کوآرڈی نیشن بنایا اور مشاورت کے بعد فیصلے کیے، تعلیم (جی پی ای) سے 20 ملین امریکی ڈالراور عالمی بنک سے 200ملین امریکی ڈالر کا سافٹ لون حاصل کیا۔ کورونا وائرس میں معیشت سے متعلق پالیسی میں کہا گیا ہے معیشت پر پڑنے والے منفی اثرات کو کم کرنے کیلئے وزیر اعظم عمران خان نے معیشت کو سپورٹ کرنے اور آبادی کے کمزور طبقات خاص طور پر روزانہ کی اجرت لینے والے اور غریب مزدوروں کیلئے 1130 ارب روپے کے مالیاتی پیکیج کا اعلان کیا، اس کے علاوہ جزوی کاروباری اور معاشی سرگرمیوں کی اجازت اور ''سمارٹ لاک ڈاؤن'' لگایا جس میں حکومت کامیاب رہی۔ 

اس پالیسی پلاننگ سیشن میں پی ٹی آئی کے متعدد رہنماؤں نے شرکت کی۔

پلڈاٹ سیشن

مزید :

صفحہ آخر -