پاکستان کا زمین و سمندر میں ہدف کو نشانہ بنانے کے حامل کرو ز میزائل بابرون اے کا کامیاب تجربہ

پاکستان کا زمین و سمندر میں ہدف کو نشانہ بنانے کے حامل کرو ز میزائل بابرون اے ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)پاکستان نے اپنی دفاعی صلاحیت میں اضافہ کرتے ہوئے جدید ترین بابرکروز میزائل کا کامیاب تجربہ کرلیا، میزائل 450 کلو میٹر فاصلے تک زمین اور سمندر میں اہداف کو نشانہ بنا نے کی صلاحیت رکھتا ہے۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے جاری کردہ بیان کے مطابق پاکستان نے بابر کروز میزائل ون اے کا کامیاب تجربہ کیا۔بابر کروز میزائل 450 کلو میٹر فاصلے تک زمین اور سمندر میں اہداف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھتا ہے، میزائل کو جدید ملٹی ٹیوب میزائل لانچ وہیکل سے داغا گیا۔آئی ایس پی آر نے بتایا کہ میزائل کے تجربے کا معائنہ چیئرمین نیسکام ڈاکٹر رضا ثمر، کمانڈر آرمی اسٹریٹجک فورسز کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل محمد علی، اسٹریٹجک پلانز ڈویڑن، آرمی اسٹریٹجک فورسز کمانڈ کے سینئر افسران، سائنسدانوں اور انجینئرز نے کیا۔ چیئرمین نیسکام نے آرمی اسٹریٹجک فورسز کی تربیت اور آپریشنل تیاریوں کے معیار کو سراہا، ساتھ ہی انہوں نے پاکستان کی اسٹریٹجک صلاحیت میں اضافے کیلئے سائنسدانوں اور انجینئرز کے تعاون کو بھی سراہا۔آئی ایس پی آر کے مطابق کامیاب تجربے پر صدر، وزیراعظم، چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی اور سروسز چیفس نے بھی مبارک باد پیش کی۔ چیئرمین نیسکام نے آرمی اسٹریٹجک فورس کی ااپریشنل تیاریوں کو سراہا۔ملکی دفاع کو ناقابل تسخیر بنانے کیلئے پاکستان اس سے پہلے بیلسٹک میزائل غزنوی اور شاہین تھری کا بھی ٹیسٹ کر چکا ہے۔ دونوں میزائل ایٹمی سمیت تمام قسم کے ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ غزنوی میزائل کی رینج 290 کلومیٹر جبکہ شاہین تھری کی 2750 کلو میٹر ہے۔

بابر ون تجربہ 

مزید :

صفحہ اول -