چولستان جیپ ریلی میں روٹ کو بنیادی اہمیت حاصل ہے‘ شیخ محمد اعجاز 

      چولستان جیپ ریلی میں روٹ کو بنیادی اہمیت حاصل ہے‘ شیخ محمد اعجاز 

  

ملتان (سٹی رپو رٹر)چولستان ڈیزرٹ ریلی میں شرکت کرنے والے زیادہ ترکھلاڑی ایڈونچر کے شوقین ہیں اور ان کو پیچ داراور ٹیلوں پر مشتمل روٹ زیادہ پسند ہے۔آبزرویشن پوسٹیں قائم کرنے سے شارٹ کٹ لگانا ممکن نہیں رہتا۔ان باتوں کا اظہار ٹورازم ڈویلپمنٹ کارپوریشن آف پنجاب ڈی جی خان آفس کے انچارج / ٹورازم آفیسر اور گزشتہ16سالوں سے چولستان جیپ ریلی کا روٹ تیارکرنے والے شیخ محمد اعجاز نے میڈیاسے بات چیت کرتے کیا۔انہوں (بقیہ نمبر44صفحہ 6پر)

 نے کہا کہ چولستان ڈیزرٹ ریلی میں روٹ کو بنیادی اہمیت حاصل ہے اور اسی روٹ پر ہی کھلاڑی گاڑیاں بھگاتے ہیں اور بھرپور ایڈونچر سے لطف انداز ہوتے ہیں۔روٹ کی تیاری میں اس بات کا خاص خیال رکھا جاتا ہے کہ اس میں ریتلا حصہّ بھی ہو۔ روٹ میں ٹیلے،پانی،کچا،ٹوبہ،سپیڈی اور سلوّ تمام حصے آئیں تاکہ کھلاڑی کو ہر جگہ اپنے فن کا مظاہرہ کرنے کا بھرپور موقعہ ملے۔ایک سوال  کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایڈونچر کے شوقین کھلاڑی پیچ دار اور ٹیلوں پر مشتمل روٹ زیادہ پسند کرتے ہیں اورسیدھے ٹریک سے ان کو سپیڈ ملتی ہے اور ٹیلوں سے ان کی گاڑی ہوا میں جمپ کرتی ہوئی جاتی ہے۔ شیخ محمد اعجاز نے کہا کہ روٹ کی تیاری میں نشانات واضح طور پر لگائے جاتے ہیں تاکہ نئے آنے والے کھلاڑیوں کو بھی روٹ پر گاڑی دوڑانے میں دشواری پیش نہ آئے۔انہوں نے کہا کہ عمومی طور پر چولستان جیپ کے ٹریک پر 10سے زائد آبزرویشن پوسٹیں بنائی جاتی ہیں۔یہ آبزرویشن پوسٹیں ان مقامات پر قائم ہوتی ہیں جہاں سے شارٹ کٹ لگائے جا سکتے ہیں۔آبزرویشن پوسٹوں کے قیام سے کھلاڑیوں کے لئے شارٹ کٹ لگانا ممکن نہیں ہوتا اور ان کا ہر پوسٹ سے گزرنا بھی لازمی ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ چولستان جیپ ریلی کے ٹریک میں مڈ بریک کو بھی خاص اہمیت حاصل ہے یہاں کھلاڑی گاڑیوں کو 20منٹ کا آرام دیتے ہیں اور گاڑیوں کی چیکنگ کے ساتھ ساتھ ان کو ری فل بھی کیا جاتا ہے۔ اس سال کھلاڑیوں کو ایک اچھا روٹ دیا جارہا ہیجو کہ ان کے اس کھیل کو یادگار بنا دے گا۔

شیخ محمد اعجاز

مزید :

ملتان صفحہ آخر -