تعلیمی سال تاخیر سے شروع ہونے پر نصاب میں کمی کا فیصلہ 

  تعلیمی سال تاخیر سے شروع ہونے پر نصاب میں کمی کا فیصلہ 

  

ملتان(جنرل رپورٹر) تعلیمی سال تاخیر سے شروع ہونے پر نصاب میں کمی کرنے کا فیصلہ، تفصیل کے مطابق محکمہ سکولز نیفیصلہ کیا ہے کہ اگر تعلیمی اسال تاخیر سے شروع ہوا تو آئندہ برس  بھی نصاب میں کمی کردی جائے گی،، امتحانات کے حوالے سے حتمی ڈیٹ شیٹ بھی آخری مراحل میں ہے امتحانات کا آغاز مئی سے ہوگا۔ سرکاری سکولوں میں امتحانات چار شفٹوں میں لیے جائیں گے، پہلی سے آٹھویں جماعت کے امتحان مئی کے آخری ہفتہ میں منعقد کیے جائیں گے، سرکاری (بقیہ نمبر29صفحہ 6پر)

سکولوں میں طلبا کا امتحان معروضی طرز پر لیا جائے گا، پیپر حل کرنے کیلئے تمام طلبا کو ایک گھنٹہ کا وقت دیا جائے گا، بچوں کا امتحان پچاس نمبر کا لیا جائے گا، جس میں پچیس سوالات ہونگے ہر سوال کے 2 نمبر ہونگے، باقی پچاس نمبر ہوم ورک کے ہونگے۔سکولوں میں بچوں کی تعداد کم ہونے پر دو یا تین شفٹوں میں بھی امتحان لیا جاسکتا ہے، پہلی اور دوسری جماعت کے بچوں سے امتحان میں زبانی سوالات پوچھے جائیں گے، امتحان کیلئے سوالیہ پرچہ جات پنجاب ایگزمینیشن کمیشن فراہم کرے گا۔ذرائع کاکہنا ہیکہ نہم و دہم جماعت کے سالانہ امتحانات 2021 کیلئے پرچہ پی سی ٹی بی کی جانب سے جاری کردہ سمارٹ سلیبس کے مطابق تیار نہیں کروایا جائے گا، پرچہ جات میں کچھ سوالات سمارٹ سلیبس سے باہر سے بھی دیئے جائیں گے، لاہور بورڈ نے ویب سائٹ پر سوالات سے متعلق گائیڈ لائنز کے طور پر پرچہ جات کے نمونے اپ لوڈ کر دیئے ہیں۔

فیصلہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -