کیا ہر امیدوار پیسے دے کر ہی سینیٹر بنتا ہے؟ 2012 میں آزاد حیثیت سے سینیٹ الیکشن جیتنے والے سردار محسن لغاری نے "ناقابل یقین کہانی "بیان کردی

 کیا ہر امیدوار پیسے دے کر ہی سینیٹر بنتا ہے؟ 2012 میں آزاد حیثیت سے سینیٹ ...
 کیا ہر امیدوار پیسے دے کر ہی سینیٹر بنتا ہے؟ 2012 میں آزاد حیثیت سے سینیٹ الیکشن جیتنے والے سردار محسن لغاری نے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینیٹ انتخابات کا وقت قریب آتے ہی سیاسی جماعتوں میں ہلچل مچی ہوئی ہے،تمام بڑی اپوزیشن جماعتوں نے ایوانِ بالا کے لئے اپنے ،اپنے امیدواروں کا اعلان کردیا ہے جبکہ خیبرپختونخوا سے حکمران جماعت کے اراکین کی دو سال پرانی ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد میڈیا میں بحث اپنے عروج پر ہے،ایسے میں پنجاب کے وزیر آبپاشی اور "گھاٹ گھاٹ " کا پانی پینے والے سردار محسن خان لغاری نے 2012ءمیں پنجاب سے آزاد حیثیت سے سینیٹر بننے کی "ناقابل یقین  کہانی" بیان کر دی ہے۔

نجی ٹی وی "دنیا نیوز"سے گفتگو کرتےہوئےحکمران جماعت پاکستان تحریک انصاف کےرہنماسردارمحسن لغاری کا کہنا تھا کہ 2012ء کے سینیٹ الیکشن سے قبل میں اسمبلی کا ممبر تھا اور میرا اسمبلی میں کچھ وقت گذر چکا تھا،اپنے کولیگز اورممبرز کے ساتھ میرااعتماد کا رشتہ اورکچھ ساکھ تھی ،جس وقت سینیٹ کے الیکشن شروع ہوئے تو میں نے لوگوں سے پوچھنا شروع کیا کہ جو ہمارے پرانے سینیٹرز ہیں کیا آپ اِن کو جانتے ہیں؟کیا اُنہوں نے کبھی صوبے کےمسائل پربات کی اور کیا صوبائی اسمبلی کے ساتھ وہ رابطے میں رہے ہیں؟کیااُنہوں نے کبھی پنجاب کے مسائل کو ایوان بالا میں ڈسکس کیا ہے؟جس پرسب کولیگز  کی رائے تھی کہ ووٹ تو ہمیں پارٹی لائن کے مطابق دینا چاہئے ۔

اُنہوں نےکہاکہ سینیٹ کی ووٹنگ  کا سسٹم بھی کافی پچیدہ ہے،اس میں ٹرانسفرایبل ووٹ ہوتا ہے،جو آپ کے مطلوبہ پوائنٹ ہوتےہیں اُن سےاگرآپ کےزیادہ پوائنٹ ہوں تو یہ ووٹ ضائع ہو جاتے ہیں یا پھراگر کسی کو آپ نےسیکنڈ پریراٹی پر ووٹ دیا ہوا ہے تو پھر وہ ٹرانسفر ہو کر اس امیدوار کی طرف آ جاتے ہیں،میرے کولیگز نے سیکنڈ پیرایرٹی پر مجھے اتنے ووٹ دیئے کہ میں نے مطلوبہ ہدف پورا کر لیا ۔

واضح رہے کہ 2012ء کےسینیٹ انتخابات میں پنجاب سے بڑا اَپ سیٹ ہوا تھا اور پیپلز پارٹی کے امیدوار اسلم گل مسلم لیگ ن کے حمایت یافتہ سردار محسن خان لغاری سے شکست کھا گئے تھے ، محسن لغاری نے 46 اور اسلم گل نے 42 ووٹ حاصل کئے،اُس وقت محسن لغاری کا تعلق مسلم لیگ ق سے تھا  تاہم انہوں نے سینیٹ کا الیکشن آزاد حیثیت سے لڑا تھا ۔بعد ازاں محسن لغاری ن لیگ میں شامل ہو گئے تھے اور2018ءکےالیکشن سےقبل ایک بارپھرمحسن لغاری نےمسلم لیگ ن کو خیرآباد کہتے ہوئے اپنے ساتھیوں سمیت تحریک انصاف کو پیارے ہو گئے تھے ۔ 

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -