نیو بالا کوٹ سٹی منصوبہ خیبر پختونخوا حکومت کے سپرد کرنیکا فیصلہ 

نیو بالا کوٹ سٹی منصوبہ خیبر پختونخوا حکومت کے سپرد کرنیکا فیصلہ 

  

اسلام آباد(آئی این پی) پارلیمنٹ کی ذیلی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی میں نیو بالاکوٹ سٹی کا معاملہ زیر بحث آگیا، کنوینر کمیٹی راجہ ریاض نے کہا کہ  میری اطلاع کے مطابق نیو بالاکوٹ سٹی میں کوئی خاص ڈویلپمنٹ بھی نہیں ہوئی اور لوگوں کو پلاٹ ابھی تک نہیں ملے جس پر چیئرمین ایرا نے کمیٹی کو بتایا کہ    وہاں زمین کے مسئلے بڑے سیریس تھے،وہاں پر احتجاج ہوئے،اب تو یہ فیصلہ ہو گیا ہے وہ پراجیکٹ خیبرپختونخوا حکومت کو ہینڈ اوور کردیں، وہ عمل شروع ہے  امید ہے چند ہفتوں میں یہ خیبر پختونخوا حکومت کو  ہینڈاوور ہو جا ئے گا کہ وہ خود اس کو ہینڈل کریں۔جمعہ کو پارلیمنٹ کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس کنوینر کمیٹی راجہ ریاض کی صدارت میں ہوا، اجلاس میں ارتھ کوئیک ری کنسٹرکشن اینڈ ری ہیبلیٹیشن اتھارٹی(ایرا)کے 2010-11سے 2017-18تک کے آڈٹ اعتراضات کا جائزہ لیا گیا، رکن کمیٹی سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ آڈٹ بریف میں 2022کی ڈی اے سی دکھائی جا رہی ہے اس سے پہلے کب ڈی اے سی ہوئی تھی؟کنوینر کمیٹی راجہ ریاض نے کہا کہ پی اے سی کی ہدایت ہے کہ تمام محکمے ہرماہ ڈی اے سی کریں گے، آپ ہرمہینے ایک ڈی اے سی کیا کریں، چیئرمین ایرا نے کمیٹی کو بتایا کہ ماہانہ ڈی اے سی ریگولر کرتے ہیں، ہر مہینے ڈی اے سی ہوتی ہے، اجلاس میں نیو بالاکوٹ سٹی سے متعلق معاملہ بھی زیر بحث آیا،کنوینر کمیٹی راجہ ریاض نے کہا کہ میری اطلاع کے مطابق نیو بالاکوٹ سٹی میں کوئی خاص ڈویلپمنٹ بھی نہیں ہوئی اور لوگوں کو پلاٹ ابھی تک نہیں ملے۔چیئرمین ایرا نے کہا کہ  وہاں زمین کے مسئلے بڑے سیریس تھے وہاں پر احتجاج ہوئے اب تو یہ فیصلہ ہو گیا ہے وہ پراجیکٹ ایرا کونسل نے کہا کہ خیبرپختونخوا حکومت کو ہینڈ اوور کردیں وہ عمل شروع ہے، امید ہے چند ہفتوں میں یہ خیبر پختونخوا حکومت کو  ہینڈاوور ہو جا ئے گا کہ وہ خود اس کو ہینڈل کریں۔آڈٹ حکام نے کمیٹی کو ایرا کی جانب سے خلاف ضابطہ طور پر منظور شدہ تعداد سے زیادہ تعیناتیاں کئے جانے سے متعلق معاملے پر بریفنگ دی  اور کہا کہ ڈی اے سی نے فیصلہ کیا تھا کہ یہ مجاز اتھارٹی سے ریگولرائز کیا جائے گا۔چیئرمین  ایرانے کہا کہ یہ مہینے  کے اندر ریگولرائزہوجائے گا،کمیٹی نے معاملے پر ایک مہینے کا وقت دے دیا۔

نیو بالا کوٹ سٹی

مزید :

صفحہ آخر -