امریکہ میں گھریلو استعمال کی اشیاء مہنگی ہونے سے عوام پریشان

امریکہ میں گھریلو استعمال کی اشیاء مہنگی ہونے سے عوام پریشان

  

واشنگٹن (آئی این پی) امریکہ میں گھریلو استعمال کی اشیاء مہنگی ہونے سے عوام کی چیخیں نکل گئیں، جو 1982 کے بعد سب سے زیادہ ہے، حکومتی ارکان شدید عوامی دباؤ کا سامنا کر رہے ہیں۔کورونا نے دنیا کے دیگر ممالک کی طرح امریکہ کی معیشت کو شدید نقصان پہنچایا ہے، جہاں قیمتوں میں گزشتہ ماہ توقع سے زیادہ اضافہ ہوا۔گھریلو استعمال کی اشیاء کی قیمتیں بڑھنے سے عوام شدید پریشان دکھائی دے رہے ہیں، جبکہ دوسری طرف مہنگائی کی مناسبت سے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہیں کیا جارہا۔واشنگٹن اس مسئلے کو حل کرنے کیلئے دباؤ میں ہے، جبکہ امریکی مرکزی بینک کی جانب سے شرح سود میں اضافے کی توقع ہے۔ مہنگائی کی اس لہر نے امریکی صدر جو بائیڈن کی مقبولیت کو نقصان پہنچایا ہے۔امریکی محکمہ محنت کا کہنا ہے کہ ماہانہ بنیادوں پر صفر اشارعیہ چھ فیصد کا اضافہ جاری ہے، رینٹ انڈیکس میں صفر اشارعیہ چار اور کچن آئٹم کی قیمتوں میں ایک فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ماہر معاشیات بیٹسی سٹیونسن کا کہنا ہے کہ بنیادی مسئلہ سپلائی سے بڑھ کر طلب ہے۔ اس مسئلے کو حل کرنے کے دو طریقے ہیں، یا تو مانگ کو کم کریں، یا پھر سپلائی بڑھانے کی کوشش کریں۔

مہنگائی 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -