شام میں خانہ جنگی اور سردی کی وجہ سے عوام کو غذائی قلت کا سامنا، قحط کا خدشہ

شام میں خانہ جنگی اور سردی کی وجہ سے عوام کو غذائی قلت کا سامنا، قحط کا خدشہ
  • شام میں خانہ جنگی اور سردی کی وجہ سے عوام کو غذائی قلت کا سامنا، قحط کا خدشہ
  • شام میں خانہ جنگی اور سردی کی وجہ سے عوام کو غذائی قلت کا سامنا، قحط کا خدشہ
  • شام میں خانہ جنگی اور سردی کی وجہ سے عوام کو غذائی قلت کا سامنا، قحط کا خدشہ
  • شام میں خانہ جنگی اور سردی کی وجہ سے عوام کو غذائی قلت کا سامنا، قحط کا خدشہ

دمشق ، نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) اقوام متحدہ نے شام میں جاری خانہ جنگی اور شدید سردی کی وجہ سے عوام کے لیے غذائی قلت کا مسئلہ کھڑا کردیاہے اور قحط کے امکانات کا خدشہ ہے ۔میڈیا رپورٹ کے مطابق شام میں جاری خانہ جنگی اور اس کے بعد مشرق وسطیٰ میں سردی کی سخت لہر برفباری کے باعث جنگ سے متاثرہ علاقوں میں غذائی اشیا کی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے۔ اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق شام کے پانچ لاکھ باشندوں کو غذائی قلت کے باعث قحط جیسی صورتحال کا سامنا ہے ۔ عرب میڈیا کے مطابق خطے میں طوفانی برفباری سے شامی مہاجر کیمپوں اور اندرون ملک رہنے والے لاکھوں شہریوں کے مسائل میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے۔عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ متاثرہ علاقوں میں خوراک اور بنیادی ضرورت کی دیگر اشیاءمیں کمی کا اصل سبب امدادی اداروں کو محفوظ اور آزادانہ نقل و حرکت کی اجازت نہ دینا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ عالمی خوراک پروگرام شام میں تقریباً پانچ لاکھ افراد کو ماہانہ غذائی امداد فراہم کررہا ہے۔

مزید : انسانی حقوق